بھارتی ریاست جھاڑ کھنڈ میں مسلمان نوجوان ہندو لڑکی سے محبت پر تشد د کے بعد قتل

بھارتی ریاست جھاڑ کھنڈ میں مسلمان نوجوان ہندو لڑکی سے محبت پر تشد د کے بعد قتل
بھارتی ریاست جھاڑ کھنڈ میں مسلمان نوجوان ہندو لڑکی سے محبت پر تشد د کے بعد قتل

  


نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) بھارتی ریاست جھاڑکھنڈ میں مسلمان نوجوان کو ہندو لڑکی سے محبت کے جرم میں تشدد کے بعد قتل کر دیا گیا ۔

”ڈیلی پاکستان “کے مطابق ریاست جھاڑکھنڈ میں مقیم مسلمان نوجوان کو غیر مسلم لڑکی کو پسند کرنے کے جرم پر درخت سے لٹکاکر وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا جس کے باعث اس کی موت واقع ہو گئی ۔

ہندوستان ٹائمز نے اپنی خبر میں دعویٰ کیا ہے کہ محمد شالک نامی 20سالہ نوجوان مبینہ طور پر قریبی گاﺅں کی ہندو لڑکی کو پسند کرتا تھا اور لڑ کی نے اسے ملنے کیلئے بلا یا تھا ۔ ابتدائی انکار کے بعد شالک کے اہل خانہ لڑکی کو ملنے گئے اور اسے گھر چھوڑ آئے ۔

”اس دن کو آج بھی نہیں بھول پاتی جب عامر خان کی وجہ سے میری انا کو ٹھیس پہنچی“: ودیا بالن نے اہم راز سے پردہ اٹھادیا

ہند و لڑکی نے پولیس کو اپنے ابتدائی بیان میں بتایا کہ ہمسائیوں نے شالک کو دیکھ کر اسے گھیر لیا اور درخت کیساتھ لٹکا کر گھنٹوں تشدد کا نشانہ بناتے رہے جو زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہو گیا ۔

واقعے کے بعد پولیس نے 3ملزمان کو گرفتار کر کے نامعلوم افراد کیخلا ف مقدمہ درج کر لیا ہے جبکہ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ اگرچہ تفتیش جاری ہے مگر گاﺅں والوں نے ہمیں بتایا ہے کہ انہوں نے محمد شالک کو لڑکی کیساتھ ملنے اور گاﺅں آنے سے منع کیا تھا ۔

پروکشن ہاﺅس کی ملازمہ نے بھارتی ہدایتکار پر جنسی تشدد کا الزام عائد کر دیا ، یہ کون ہیں ؟ جاننے کیلئے یہاں کلک کریں

دوسری جانب ہندو انتہا پسندوں نے الزام عائد کیا ہے کہ ”لوو جہاد “ ایسا عمل ہے جس کے تحت مسلمان لڑکے اور مرد غیر مسلم خواتین اور لڑکیوں کو ٹارگٹ کر تے ہیں تاکہ انہیں دائرہ اسلام میں داخل کر سکیں ۔ 

مزید : بین الاقوامی


loading...