امریکہ کی جانب سے شام کے فوجی اڈے پر میزائلوں کی بارش کے فوری بعد داعش نے کیا کام کردیا؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

امریکہ کی جانب سے شام کے فوجی اڈے پر میزائلوں کی بارش کے فوری بعد داعش نے کیا ...
امریکہ کی جانب سے شام کے فوجی اڈے پر میزائلوں کی بارش کے فوری بعد داعش نے کیا کام کردیا؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

  


دمشق (مانیٹرنگ ڈیسک) شام کے صدر بشارالاسد پر گویا ہر طرف سے یلغار ہوگئی ہے۔ ایک جانب امریکہ نے حمس شہر کے اہم فضائی اڈے کو ٹوما ہاک میزائلوں سے برباد کردیا تو دوسری جانب اس واقعہ کے فوری بعد شہر کے مشرقی حصے میں داعش نے یلغار کردی۔

ویب سائٹ میسدونیہ آن لائن کی رپورٹ میں المصدر کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ داعش نے امریکی فضائی حملے سے فائدہ اٹھاتے ہوئے سیرین عرب آرمی کی چوکیوں پر حملہ کر دیا۔ اس سے پہلے شامی فضائیہ کے خوف سے داعش اس علاقے میں پوری طرح متحرک نہیں ہوپارہی تھی مگر اہم فضائی اڈے کے تباہ ہونے کے بعد داعش کو فضائی حملے کا خدشہ نہیں رہا۔ امریکی حملے کا نشانہ بننے والی شائرات ملٹری ائیربیس شامی فضائیہ کی اہم ترین تنصیبات میں سے ایک تھی۔ اسے داعش کے خلاف جنگ میں بھی نہایت اہمیت حاصل تھی۔ یہ ائیربیس پالمیرا اور دیر الزور کے جنگی محاذوں کے قریب واقع ہے جہاں بشارالاسد کی افواج داعش کے ساتھ برسرپیکار ہیں۔

امریکی فوج کے اہم ترین راز چوری ہوگئے، کس ملک نے چُرالئے؟ نام جان کر پوری دنیا امریکی فوج پر ہنسنے لگی کیونکہ۔۔۔

امریکی حملے کے فوری بعد داعش کی یلغار نے دفاعی تجزیہ کاروں کو یہ سوال اٹھانے پر مجبور کر دیا ہے کہ کیا امریکی حملے کا مقصد داعش کی مدد کرنا تھا؟ یہ بات بھی اہم ہے کہ شامی ائیربیس پر امریکہ کے حملے کے بعد صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اس اقدام کو القاعدہ اور داعش کی جانب سے بھی سراہا گیا۔ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ امریکہ نے شام پر یہ حملہ ایک ایسے وقت پر کیا ہے جب جنگ عظیم اول میں اس کی شمولیت کے فیصلے کو 100 سال مکمل ہوچکے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...