گوادر میں بریک واٹر وال تھیم پارک ،واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ سمیت دیگر منصوبوں کی منظوری

گوادر میں بریک واٹر وال تھیم پارک ،واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ سمیت دیگر منصوبوں کی ...

کوئٹہ(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعلیٰ بلوچستان و چیئرمین گوادر ڈویلپمنٹ اتھارٹی گورننگ باڈی جام کمال خان کی زیرصدارت منعقد ہونے والے گورننگ باڈی کے 18ویں اجلاس میں گوادر شہر (اولڈٹاؤن) کی ٹاؤن پلاننگ اور بہتری کے منصوبوں کی منظوری دیتے ہوئے گوادر ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو نکاسی آب، سڑکوں اور گلیوں کی پختگی اور شہری سہولتوں کی فراہمی کے منصوبوں پر فوری طور پر عملدرآمد کا آغاز کرنے کی ہدایت کی گئی ہے، گورننگ باڈی کے اجلاس میں رکن قومی اسمبلی محمد اسلم بھوتانی، رکن صوبائی اسمبلی میر حمل کلمتی سمیت گورننگ باڈی کے دیگرا راکین نے شرکت کی جبکہ ڈی جی جی ڈی اے شاہ زیب کاکڑ کی جانب سے اجلاس کا ایجنڈا پیش کیا گیا، گورننگ باڈی نے سربندر میں سمندری کٹاؤ کی روک تھام کے لئے بریک واٹر وال کی تعمیر کی منظوری بھی دی، اجلاس میں گوادر واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ فیز IIکے تحت پائپ لائن کی تنصیب کے منصوبے ، پیشو کان ایونیو اور پدیزر ایونیو کو منسلک کرنے کیلئے لنک روڈ کی تعمیر، گوادر کے سینٹرل پارک کی بہتری، پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت تھیم پارک کی تعمیر، جے ڈی اے بلڈنگ کنٹرول سیکشن کے پولیس اسکواڈ کے لئے 16آسامیوں اورواٹر باؤزر اور صفائی سمیت دیگر جدید مشینری خریدنے کی منظوری بھی دی گئی، اجلاس نے جی ڈی اے کے لئے صوبائی حکومت کی جانب سے مالی معاونت کے لئے سالانہ بنیادوں پر قابل واپسی گرانٹ کی فراہمی کی منظوری بھی دی جبکہ جی ڈی اے کے حدود کار میں اضافے سے اصولی طور پر اتفاق کرتے ہوئے اس ضمن میں سمری صوبائی کابینہ کے اجلاس میں پیش کرنے کی ہدایت کی گئی، اجلاس میں گوادرکی مقامی آبادی کے لئے جدید سہولتوں سے آراستہ رہائشی منصوبے اور نئی جیٹی کی تعمیر کے مجوزہ منصوبوں کا بھی جائزہ لیتے ہوئے ان کی منظوری دی گئی اور جی ڈی اے کو ہدایت کی گئی کہ گوادر کے موجود ہ شہر کی ترقی سمیت دیگر منصوبوں میں مقامی آبادی کی مشاورت اور رضامندی بھی حاصل کرتے ہوئے ان میں احساس شراکت داری اجاگر کیا جائے اور مقامی آبادی کے معاشی تحفظ کو یقینی بنایا جائے، اجلاس میں جی ڈی اے کو ہدایت کی گئی کہ واٹر ٹریٹمنٹ سے حاصل ہونے والے پانی کو شجر کاری، پارکوں، تعمیرات اور کارواشنگ جیسے کاموں کے لئے بروئے کار لایا جائے اور اس پانی کو تجارتی بنیادوں پر استعمال کرتے ہوئے حاصل ہونے والی آمدنی کو واٹرٹریٹمنٹ پلانٹ کے اخراجات سمیت شہر کی ترقی کے منصوبوں کے لئے بروئے کار لایا جائے، اجلاس میں گوادر میں بننے والی نئی ہاؤسنگ سکیمو ں کو واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ اور نکاسی آب کے نظام کے قیام کا پابند بنانے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

گوادر

مزید : صفحہ آخر


loading...