بجلی کی قیمت میں اضافہ ظلم اور حکومتی دعووں کی نفی ہے،محمد حسین محنتی

بجلی کی قیمت میں اضافہ ظلم اور حکومتی دعووں کی نفی ہے،محمد حسین محنتی

کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ کے امیر و سابق ایم این اے محمد حسین محنتی نے کہا ہے کہ پیٹرول اور ایل پی جی کی قیمتوں میں اضافہ کے بعدایک بارپھر بجلی کی قیمت میں 81 پیسے فی یونٹ اضافہ عوام کے ساتھ ظلم اور حکومتی دعؤوں کی نفی ہے۔ انہوں نے آج ایک بیان میں کہا کہ پی ٹی آئی حکومت نے سات ماہ کی تھوڑی سے مدت میں بیرونی قرضے اور مہنگائی میں پانچ سالہ ریکارڈ توڑ کر حکومت سے وابستہ امیدوں پر پانی پھیر دیا ہے۔ عوام پہلے ہی مہنگائی و بیروگاری سے تنگ تھے حالیہ فیصلے سے ان کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگا۔ بجلی بم گرانے کے نتیجے میں صارفین پر 5 ارب 20 کروڑ کا اضافی بوجھ پڑے گا جبکہ گیس کی قیمتیں بڑھنے سے تین ارب کا اضافی بوجھ پہلے ہی عوام پر ڈالاجاچکا ہے۔ دوسری جانب ادویات کی قیمتوں میں ایک سو فیصد اضافہ کر کے جینا مشکل اور مرنا آسان بنا دیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان اور ان کی ٹیم نے انتخابات سے قبل عوام کو جو سہانے خواب دکھائے تھے وہ سب ایک ایک کر کے چکنا چور ہوتے جارہے ہیں۔ رمضان کی آمد سے قبل ہی ذخیرہ خور مصروف اور مہنگائی نے عوام کے ہوش اڑا دیئے ہیں۔ صوبائی امیر نے زور دیا کہ حکومت مہنگائی کے خاتمے، قیمتوں پر کنٹرول اور ذخیرہ خور حرام خوروں کے خلاف سخت کاروائی کر کے عوام کو ریلیف اور عام آدمی کا معیار زندگی بہتر بنانے کیلئے کرپشن فری اقدامات کئے جائیں۔ بار بار پیٹرول ، بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کی بجائے کفایت شعاری غیر ضروری و غیر ترقیاتی اخراجات ختم کئے جائیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...