گلگشت اور نشر ایمرجنسی ،خرم عرف کاشی سپردخاک ،دوملزم گرفتار گینگ وار بڑھنے کا خدشی

گلگشت اور نشر ایمرجنسی ،خرم عرف کاشی سپردخاک ،دوملزم گرفتار گینگ وار بڑھنے ...

ملتان (وقائع نگار) گلگشت کے علاقہ میں دو گروپوں میں لڑائی اور قتل کا معاملہ۔پولیس تھانہ گلگشت نے خرم عرف کاشی خان کو فائرنگ کرکے قتل کے الزام کے تحت چھ افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔نامزد مقدمہ کے دو ملزم گرفتار دیگر کی تلاش کیلئے چھاپے مارے جارہے ہیں۔ملزمان کے لواحقین کا مقامی پولیس پر وکلا کے ذریعے پریشر ڈالنے کی کوشش ناکام۔ گل گشت پولیس نے مقتول کا پوسٹ مارٹم کروانے کے بعد لاش ورثاء کے حوالے کردی۔(بقیہ نمبر53صفحہ12پر )

جبکہ دوسری جانب گزشتہ روز مقتول کو نماز جنازہ کے بعد اسکو سپرد خاک کردیا گیا۔علاقہ ایس ایچ او صادق ڈوگر بھی نماز جنازہ میں شریک ہوئے۔معلوم ہوا ہے تھانہ گل گشت کے علاقے گول باغ کے قریب گزشتہ روز خرم عرف کاشف پٹھان عرف کاشی خان اور اسکے ساتھیوں کی اعوان گروپ سرور۔ہادی۔حیدر ودیگر کا مقدمہ کی پیروی کی رنجش پر لڑائی شروع ہوئی۔تو اس دوران خرم عرف کاشی خان نے فائرنگ کرکے حیدر کو زخمی کردیا۔جبکہ اعوان گروپ کے ساتھی نے پسٹل سے فائرنگ کرکے خرم عرف کاشی خان کو زخمی کردیا۔کنٹرول پر اطلاع موصول ہوتے ہی ایس ایچ او انسپکٹر گلگشت صادق ڈوگر فوری طور پر موقع پر پہنچ گیا۔جس نے خرم پر فائرنگ کرنے والے ملزم اور اسکے دیگر ساتھی کو حراست میں لیکر اسلحہ برآمد کرلیا۔جبکہ ملزمان کے دیگر ساتھی ہجوم زیادہ ہونے کی وجہ سے موقعہ سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔مقامی پولیس نے دونوں زخمیوں کو نشتر ایمرجنسی منتقل کرنے اقدامات کیئے۔تو تھانہ گل گشت کے اے ایس آئی اللہ بخش خرم کو لیکر نشتر پہنچا۔ایمرجنسی میں پہلے سے موجود اعوان گروپ کے لڑکوں نے زخمی حالت میں خرم عرف کاشی خان کو زخمی حالت میں سٹریچر سے نچے زمین۔ پر پھینک کر بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔تو اس موقع پر موجود پولیس خرم پر ہوتے ہوئے تشدد کو روکنے میں بری طرح ناکام رہی۔ایمرجنسی عملیکی مداخلت پر خرم کو تشویش ناک حالت میں دوبارہ سرجیکل وارڈ ایمرجنسی منتقل کیا گیا۔جو زخموں کو تاب نہ لاتے ہوئے اپنی جان کی بازی ہارگیا۔ نشتر ہسپتال انتظامیہ کی ایک بار پھر مداخلت پر پولیس تھانہ کینٹ نے نشتر ایمرجنسی میں خرم پر ہونے والے تشدد کے الزام میں دس سے زائد افراد کے خلاف اقدام قتل کا مقدمہ درج کرلیا۔جبکہ دوسری جانب گل گشت پولیس نے۔مقتول کا پوسٹ مارٹم کروانے کے بعد لاش ورثاء4 مے حوالے کردی۔اورچھ افراد پر قتل کی دفعہ ے تحت مقدمہ درج کرلیا ہے۔واضح رہے پولیس نے نشتر ایمرجنسی کے باہر ایک گاڑی کے اندر سے اسلحہ بھی برآمد کرکے قبضے میں کے لیا۔تھانہ گل گشت میں درج مقدمہ نامزد ملزمان میں محمد سرور۔ہادی۔حیدر ہیں اور دیگر تین نامعلوم ہے۔فرار ملزمان کی گرفتاری کیلئے پولیس چھاپے مار رہی ہے۔ذرائع کے مطابق قتل کا مقدمہ درج ہونے کی اطلاع پر گرفتار ملزمان کا والد وکلاء4 کے ہمراہ تھانہ اگیا۔اور ایس ایچ او صادق ڈوگر پر پریشر دی ے لگا۔کہ میرے بچے پڑھنے لکھنے والے ہیں۔ایس ایچ او تحمل مزاجی سے گفتگو سننے کے بعد کہا کہ قتل کے اس کیس میں سو فی صد میرٹ کو ترجیح دی جائے۔اصل ملزم ہی۔مقدمے میں چالان ہوگا۔۔مقتول خرم خان کے ورثاء نے اسکا گزشتہ روز سرکٹ ہاؤس کے سامنے گراسی پلاٹ میں نماز جنازہ پڑھایا۔اس موقع پر ایس ایچ او صادق ڈوگر بھی موجود تھا۔ذرائع کے مزید مطابق۔مقتول خرم عرف کاشی خان کا کچھ سال قبل ایک بھائی بھی قتل ہوا تھا۔ذرائع نے بتایا کہ خرم عرف کاشی کی ہلاکت کے بعد مقتول سے تعلق رکھنے والا گینگ مشتعل ہے اور مخالفین پر حملے کا خدشہ بڑھتا جا رہا ہے ‘ لہٰذا گینگ وار میں شدت آ سکتی ہے ‘ علاوہ ازیں درج ہونیوالی ایف آئی آر میں خرم کی ساس کا تذکرہ بھی آیا ہے اور مقتول خرم کے والد کے مطابق ساس کا اس واقعہ میں ایما شامل ہے ۔

گینگ وار

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...