افغان حکومت نے طالبان سے مذاکرات کے لیے 22 رکنی ٹیم تشکیل دے دی

افغان حکومت نے طالبان سے مذاکرات کے لیے 22 رکنی ٹیم تشکیل دے دی
افغان حکومت نے طالبان سے مذاکرات کے لیے 22 رکنی ٹیم تشکیل دے دی

  


کابل(ڈیلی پاکستان آن لائن)افغانستان نے طالبان سے مذاکرات کے لیے22رکنی ٹیم تشکیل دے دی ہے جو 14 اور 15 اپریل کو قطر میں ہونے والے امن مذاکرات میں حصہ لے گی۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق افغان حکومت نے امن مذاکرات کے لیے عبدالسلام رحیمی کی سربراہی میں 22اراکین پر مشتمل مذاکراتی ٹیم تشکیل دے دی ہے,مذاکراتی ٹیم 14اور 15اپریل کو قطر میں طالبان نمائندوں سے مذاکرات کرے گی۔افغان حکومت کے ایک اعلی سطح کے اجلاس میں امن مذاکراتی ٹیم کے اراکین کا انتخاب کیا گیا جب کہ 37اراکین پر مشتمل قومی مفاہمتی کونسل کے قیام کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے جو اندرونی اور بیرونی سٹیک ہولڈرز سے ہونے والے مذاکرات کی نگرانی کرے گی۔مذاکراتی کمیٹی اور مفاہمتی کونسل مشترکہ طور پر افغانستان میں جاری خانہ جنگی کے خاتمے اور سیاسی مفاہمت کے لیے اپنا کردار ادا کریں گی اور اس حوالے سے تمام فریقین بشمول پاکستان، سعودی عرب، امریکا اور قطر کی قیادت سے بھی رابطے کیے جائیں گے۔

واضح رہے کہ اب تک ہونے والے طالبان، امریکا اور دیگر فریقین کے درمیان ہونے والے امن مذاکرات کے کسی بھی موقع پر کابل حکومت کو شامل نہیں کیا گیا تھا, یہ پہلا موقع ہوگا جب امن مذاکرات میں افغان حکومت اپنا موقف پیش کرے گی.

مزید : بین الاقوامی


loading...