پنجاب میں مرحلہ وار لاک ڈاؤن، کاروبار نئے ایس اوپیز کیساتھ کھول دیئے جائینگے

  پنجاب میں مرحلہ وار لاک ڈاؤن، کاروبار نئے ایس اوپیز کیساتھ کھول دیئے ...

  

لاہور(لیاقت کھرل) پنجاب بھر میں مرحلہ وار لاک ڈاؤن میں توسیع کے سلسلے میں اگلے 7 روز کیلئے دفعہ 144 میں توسیع کرتے ہوئے نوٹیفکیشن جاری ہونے کے بعد تمام اضلاع کی انتظامیہ اور پنجاب پولیس کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔محکمہ داخلہ پنجاب کے ذرائع کا کہنا ہے کہ لاہور سمیت پنجاب بھر میں لاک ڈاؤن کو ختم نہیں کیا جا رہا بلکہ اس میں مرحلہ وار توسیع کی جا رہی ہے اور یہ حکمت عملی کامیاب رہی ہے۔ لاک ڈاؤن کا بیک وقت 30 اپریل تک کا نوٹیفکیشن جاری نہیں کیا جا سکتا بلکہ اس سلسلے میں مرحلہ وار کام کیا جائے گا۔ اسی طرح 14 اپریل کو اگلے سات روز یعنی 22 اپریل اور پھر30 اپریل تک کیلئے نوٹیفکیشن جاری ہو گا۔ ذرائع کے مطابق محکمہ داخلہ پنجاب کو وزیراعظم کی ہدایت پر وزیراعلیٰ پنجاب نے اس حوالے سے باقاعدہ ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔آئندہ 21 روز میں پنجاب حکومت کی کوشش ہو گی کہ روزمرہ زندگی سے وابستہ ضروری کاروبار بتدریج کھولے جائیں گے، کاروباری طبقہ اور صنعتی سیکٹر کے لئے نئے ایس او پیز بھی بنائے جائیں گے۔ذرائع کے مطابق صنعتی شعبے کیلئے نئے ایس او پیز کی تیاری کا کام مکمل کر لیا گیا ہے ان پر اگلے روز سے ہی عملدرآمد کرایا جائے گا۔ پہلے مرحلے میں معمولی کاروبار بحال کئے جائیں گے جبکہ محکمہ ٹیلی فون، سوئی گیس، ریلوے،پاک پی ڈبلیو، واسا پی ایچ اے سمیت سٹی گورنمنٹ میں احتیاطی تدابیر کے ساتھ مخصوص شعبوں کو فعال کیا جائے گا۔ مخصوص سٹاف کو ڈیوٹی پر بلایاجائیگا۔ اسی طرح صنعتوں، کارخانوں اور فیکٹریوں میں ورکروں کے لئے نئی پالیسی نافذ ہو گی، گارمنٹس اور اس طرح کی پیداواری صنعتوں اور کارخانوں کو فعال کیا جائیگا۔ضلعی انتظامیہ، محکمہ لیبر، محکمہ انڈسٹریز اور پولیس کے اعلیٰ افسران(ڈی پی اوز) پر مشتمل کمیٹیاں تشکیل دی گئی ہیں جو کہ صنعتوں، فیکٹریوں اور کارخانوں کے لئے جاری کردہ نئے ایس او پی پر عملدرآمد کروائیں گے اور مالکان کیساتھ مشاورت کریں گے۔ محکمہ داخلہ کو لاک ڈاؤن کے تیسرے مرحلے میں لاک ڈاؤن کو تیسرے مرحلے میں لاک ڈاؤن کو نرم کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔دوسری جانب ایڈیشنل آئی جی اور ترجمان پنجاب پولیس انعام غنی کا کہنا تھا کہ لاک ڈاؤن کے دوران دفعہ 144 کی خلاف ورزی پر سخت احکامات کی پابندی کی جا رہی ہے،اس سلسلہ میں شہریوں کی شکایات کو فوری طور پر دور کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

لاک ڈاؤن

مزید :

صفحہ اول -