امرود کی برآمد سے بھاری زرمبادلہ کمایا جا سکتا ہے، زرعی تحقیاتی کونسل

امرود کی برآمد سے بھاری زرمبادلہ کمایا جا سکتا ہے، زرعی تحقیاتی کونسل

  

اسلام آباد (اے پی پی) زرعی ماہرین نے کہا ہے کہ پراسیسنگ کی سہولت کو فروغ دے کر امرود کی تیار مصنوعات کی برآمد سے بھاری زرمبادلہ کمایا جا سکتا ہے، امرود پاکستان میں پیدا ہونے والا مقدار کے لحاظ سے تیسرا بڑا پھل ہے، رقبہ اور پیداوار کے لحاظ سے ترشاوہ پھل اور آم کے بعد امرود کا نمبر آتا ہے۔ زرعی تحقیقاتی کونسل (پی اے آر سی) کی رپورٹ کے مطابق امرود پاکستان کے چاروں صوبوں میں اگایا جاتا ہے۔ اس کی زیادہ تر کاشت حیدر آباد، لاڑکانہ، خیرپور، ملتان، سرگودھا، گوجرانوالہ، لاہور، شیخوپورہ، فیصل آباد، کوہاٹ، ہزارہ، ڈیرہ اسماعیل خان، بنوں سمیت دیگر کئی علاقوں میں کی جاتی ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق غذائی اعتبار سے امرود کو وٹامن سی کا بادشاہ کہا جاتا ہے۔ 100 گرام امرود میں 280 ملی گرام وٹامن سی موجود ہوتا ہے جو دیگر پھلوں کے مقابلہ میں کہیں زیادہ ہے۔ اس کے علاوہ امرود میں وٹامن اے، فاسفورس، چونا اور فولاد بھی پایا جاتا ہے۔

مزید :

کامرس -