کوئٹہ میں ڈاکٹروں پر تشدد حکومتی غنڈہ گردی ہے: بلاول بھٹو زرداری

        کوئٹہ میں ڈاکٹروں پر تشدد حکومتی غنڈہ گردی ہے: بلاول بھٹو زرداری

  

اسلام آباد/کراچی/لاڑکانہ/کوئٹہ(این این آئی)چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کوئٹہ میں ڈاکٹروں پر تشدد اور ان کی گرفتاریوں پر سخت الفاظ میں ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حفاظتی لباس کے مطالبے پر کوئٹہ میں ڈاکٹروں پر تشدد حکومتی غنڈہ گردی ہے، ڈاکٹروں کو حفاظتی لباس اور آلات فراہم کرنے کی بجائے ان پر تشدد اور انہیں جیل بھجوا دینا کہاں کا انصاف ہے؟۔ ایک بیان میں چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ ایک ایسے وقت جب ڈاکٹروں کی ضرورت ہسپتالوں میں ہے انہیں جیل بھجوا دیا گیا ہے۔ پی ٹی آئی حکومت جائز مطالبات پر تشدد اور گرفتاریاں کرکے انسانی حقوق کی دھجیاں اڑا رہی ہے۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ڈاکٹرز کورونا وائرس کے خلاف فرنٹ لائن پر جدوجہد کر رہے ہیں،پوری دنیا میں ڈاکٹروں کی خدمات کو سراہا جا رہا ہے، نئے پاکستان کی سرکار انہیں جیل بھجوا رہی ہے۔ ڈاکٹروں پر تشدد اور گرفتاری سے ان کا مورال ڈاؤن کرنے کی کوشش پی ٹی آئی حکومت کی بدترین نااہلی ہے۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ڈاکٹر خود کو تنہا نہ سمجھیں پاکستان پیپلزپارٹی ان کے ساتھ کھڑی ہے۔ چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ میں ملک بھر میں کورونا وائرس کے حوالے سے ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کی زبردست خدمات پر انہیں سلام پیش کرتا ہوں۔  چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی ہدایات پر پارٹی کی ریلیف کمیٹی نے 1000 ماسک اور 300 گلوز علیحدہ علیحدہ گلگت اور بلتستان کے لئے روانہ کی ہیں۔ اس کے علاوہ 1500 ماسک اور 600گلوز مظفرآباد آزاد کشمیر بھجیے ہیں۔ یہ طبی حفاظتی سامان پاکستان پیپلزپارٹی کی متعلقہ لیڈرشپ نے اپنے اپنے علاقوں کی انتظامیہ کو پہنچائیں۔ یہ حفاظتی ماسکس اور گلوز سینیٹ کے ڈپٹی چیئرمین سلیم مانڈوی والا نے امپورٹ کئے ہیں۔ کورونا وائرس کی ریپیڈ ٹسٹنگ کٹس بھی اگلے ہفتے تک پہنچے کا امکان ہے جنہیں مختلف ہسپتالوں اور لیبارٹریوں کو بجھوا دئیے جائیں گے۔ 

چیئر مین پیپلز پارٹی

مزید :

صفحہ اول -