ہنگو، افغانستان میں گرفتار داعش کمانڈر اسلم فاروقی کا تعلق اور کزئی سے ہے

ہنگو، افغانستان میں گرفتار داعش کمانڈر اسلم فاروقی کا تعلق اور کزئی سے ہے

  

ہنگو(بیورو رپورٹ)افغانستان میں گرفتار داعش کمانڈر اخوانزادہ اسلم فاروقی عرف عبداللہ کاتعلق ضلع اورکزئی ماموزئی قبیلے سے ہے اخونزادہ اسلم فاروقی عرف عبداللہ نے 2003اور 2004میں ضلع اورکزئی میں طالبان کے نام سے تحریک شروع کیاتھا جس کو اس وقت پولیٹیکل انتظامیہ کی سپورٹ حاصل تھی اخونزادہ اسلم فاروقی کو حکومت کی سپورٹ کے ساتھ ساتھ پولیٹیکل انتظامیہ کے جانب سے سرکاری جرگے بھی کررہے تھے جبکہ 2007اور 2008میں حکومت اورطالبان کے درمیان مذاکرات اور جرگوں میں بھی شامل ہوتے تھے 2010میں کالعدم سابقہ ٹی ٹی پی کمانڈر حکیم اللہ محسود کے اورکزئی کے علاقہ ماموزئی میں انے کے بعد 2013میں اخونزادہ اسلم فاروقی عرف عبداللہ اپنے خاندان سمیت ٹی ٹی پی میں شامل ہوگئے اس سے پہلے وہ کالعدم تحریک سپاہ صحابہ پاکستان کیلئے بھی کام کررہے تھے 2016میں ضلع اورکزئی سے فرار ہوکر افغانستان ننگرہار چلے گئے 2019میں افغانستان میں داعش کے کمانڈر کے ہلاکت کے بعد اخونزادہ اسلم فاروقی عرف عبداللہ کو 2019میں داعش کا نیا سربراہ مقرر کیاگیا ضلع اورکزئی میں وہ اپنے اصلی نام اخونزادہ اسلم فاروقی کے نام سے جانے جاتے تھے جبکہ افغانستان جانے کے بعد ان کا عبداللہ رکھ لیاگیا اورکزئی میں ٹی ٹی پی میں شامل ہونے کے بعد اخونزادہ اسلم فاروقی لوئر اورکزئی کے علاقہ لیڑہ اور دیگر علاقوں میں ٹی ٹی پی کا کمانڈر رہے موصول اطلاع کے مطابق افغانستان میں اسلم فاروقی کے ساتھ گرفتار 11افراد کا تعلق افغانستان سے ہیں اور تین افراد کا تعلق ضلع خیبر سے ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -