نجی سکولوں کی انتظامیہ اساتذہ کی تنخواہوں کا بندوبست کرے

نجی سکولوں کی انتظامیہ اساتذہ کی تنخواہوں کا بندوبست کرے

  

پشاور (سٹی رپورٹر)آل پاکستان ایجوکیشنل ایسوسی ایشن(APEA)کے عہدیداران نے کرونا کے باعث نجی سکولوں کے بندش سے پیدا ہونیوالے صورت ہال پر حکومت سے نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ نجی سکولوں کے انتظامیہ اور اساتذہ کو تنخواہیں دینے کیلئے اقدامات اٹھائے جائیں،نجی سکولز کے یوٹلیٹی بلز معاف کرنے سمیت اداراوں کیلئے خصوصی پیکج کا اعلان کیا جائے تاکہ نجی تعلیمی اداروں کو ہمیشہ کیلئے بند ہونے سے بچایا جا سکے جبکہ حکومت کو چاہئے کہ 15سے 35لاکھ تک اسان اقساط پر بلا سود قرضے دئے جائے پشاور پریس کلب میں آل پاکستان ایجوکیشنل ایسو سی ایشن کے عہدیداراور چیئرمین نیشنل ایجوکیشن کونسل نذر حسین نے اپنے دیگر عہدیداروں کے پریس ہمراہ کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ نجی سکولوں کی طویل بندش سے سنگین صورت حال پیدا ہو چکی ہے جبکہ حکومت اس طرف توجہ دے نہیں تو تعلیمی ادارے بند ہو جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ نجی سکولز ملک میں 70فیصد تعلیمی بوجھ کی ضامن ہے تاہم والدین کی جانب سے سپریم کورٹ آف پاکستان کے ہدایت کے باوجود طویل تعطیلات کی فیس ادا کرنے کیلئے تیار نہیں جسکی وجہ سے سکولز کی انتظامیہ مختلف مسائل سے دو چار ہے جبکہ دوسری طرف سکول عمارتوں کے مالکان بھی کرایہ مانگنے لگتے ہے جو نجی سکولز کیلئے سنگین مسلہ ہے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ نجی سکولوں کیلئے خصوصی پیکج کا اعلان کریں یا تین ماہ تعلیمی اداروں کے عمارت کا کرایہ،سٹاف کی تین ماہ کی تنخواہ سرکاری خزانے سے ادا کریں اور یوٹلیٹی بلز کو معاف کیا جائے تاکہ تعلیمی اداروں کو ہمیشہ کیلئے بند ہونے سے بچایا جا سکے بصورت دیگر تعلیمی اداروں کو 15سے 35لاکھ تک آسان اقساط پر بلا سود قرضے جاری کی جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -