زکوٰاۃ فنڈزایک لاکھ مستحق خاندانوں کو 12ہزار دینے کی منظوری دی ہے: محمودخان

زکوٰاۃ فنڈزایک لاکھ مستحق خاندانوں کو 12ہزار دینے کی منظوری دی ہے: محمودخان

  

پشاور (سٹاف رپورٹر) کورونا صورتحال کے پیش نظر لوگوں کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دینے کیلئے صوبائی حکومت کے اقدامات کے تحت صوبے کے ایک لاکھ مستحق خاندانوں کو زکوٰۃ فنڈ سے فی خاندان 12 ہزار روپے دیئے جائیں گے، جس پر ایک ارب 20 کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔ یہ رقوم چھ، چھ ہزار روپے کی دو قسطوں میں ادا کئے جائیں گے۔ یہ امدادی رقوم صوبائی حکومت کی طرف سے احساس پروگرام کے تحت دیئے جانے والے پیکج کے علاوہ ہے۔ اس بات کا فیصلہ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کی زیر صدارت پیر کے روز محکمہ زکوۃ اور سماجی بہبود کے ایک اجلاس میں کیا گیا۔ چیئرمین صوبائی زکوۃ کمیٹی، سیکرٹری زکوۃ اور سماجی بہبود کے علاوہ دیگر متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ اس پیکج کے لئے 29 ہزار خاندانوں کی پہلے سے رجسٹریشن کی جاچکی ہے، جبکہ دیگر خاندانوں کی رجسٹریشن کیلئے ہنگامی بنیادوں پر کام جاری ہے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ مستحق خاندانوں کی نشاندہی مقامی زکوۃ کمیٹیوں کے ذریعے کی جائیں گی جس کے بعد ان کی مزید چھان بین کی جائے گی تاکہ یہ رقوم صرف مستحق لوگوں کو ملے اور اس میں شفافیت کو یقینی بنایا جاسکے۔ وزیراعلیٰ نے حکام کو ہدایت کی کہ پہلے سے رجسٹرڈ مستحق خاندانوں کوامداد ی رقوم کی تقسیم اور دیگر خاندانوں کی نشاندہی کا عمل بغیر کسی تاخیر کے شروع کیا جائے اور امداد ی رقوم کی تقسیم کے سارے عمل میں شفافیت کو ہر لحاظ سے یقینی بنایا جائے۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ موجودہ صورتحال کے پیش نظر ہمیں لوگوں کی تکالیف کا بھر پور احساس ہے اور حکومت لوگوں کی تکالیف کو کم کرنے کیلئے تمام تر دستیاب وسائل بروئے کار لائے گی۔ وزیراعلیٰ نے مزید کہا کہ حکومت لاک ڈاؤن کئے گئے علاقوں میں لوگوں کو فوڈ پیکج کی فراہمی پر بھی سنجیدگی سے غور کر رہی ہے۔

پشاور (سٹاف رپورٹر)صوبائی ٹاسک فورس برائے انسداد کورونا کا اجلاس وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کی زیر صدارت پیر کے روز پشاور میں منعقد ہوا۔ اجلا س کو صوبے میں کورونا وائرس کی تازہ ترین صورتحال، سماجی رابطوں کو کم سے کم کرنے کیلئے حکومتی اقدامات پر عمل درآمد، احساس پروگرام کے توسط سے صوبے کے کمزور طبقوں کو امداد کی فراہمی اور دیگر کئی متعلقہ اُمور کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔صوبائی وزیر صحت تیمور سلیم جھگڑا اور وزیراعلیٰ کے مشیر برائے اطلاعات اجمل وزیر کے علاوہ کور کمانڈر پشاور لیفٹیننٹ جنرل نعمان محمود، چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا ڈاکٹر کاظم نیاز، ایڈیشنل چیف سیکرٹری شکیل قادراور متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریوں نے اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ اب تک صوبے میں کورونا کے مشتبہ کیسز کی تعداد 1211، مصدقہ کیسوں کی تعداد 340 اور ہلاکتوں کی تعداد 15 ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران صوبے میں کورونا کے 33 مصدقہ اور 260 مشتبہ کیسز سامنے آئے ہیں جبکہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران دو ہلاکتیں ہوئی ہیں۔ مزید بتایا گیا کہ اس وقت صوبے بھر میں کورونا کے متاثرین کیلئے 215 قرنطینہ مراکز، 554 ہائی ڈیپنڈسی یونٹس اور 2400 بستروں پر مشتمل آئسولیشن مراکز قائم کئے گئے ہیں جنہیں ضرورت پڑنے پر بڑھایا جائیگا۔ محکمہ صحت کے حکام کی طرف سے اجلاس کے شرکاء کو آگاہ کیا گیا کہ ہسپتالوں میں فرنٹ لائن پر کام کرنے والے طبی عملے کیلئے حفاظتی اشیاء کی فراہمی میں نمایاں بہتری آئی ہے۔ اب تک مختلف اضلاع کو 26 ہزار N-95 ماسکس فراہم کئے گئے ہیں مزید فراہمی کا عمل جاری ہے جبکہ اس مقصد کیلئے تمام ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسرز کو مجموعی طور پر 175 ملین روپے جاری کئے گئے ہیں۔ احساس پروگرام کے توسط سے صوبائی حکومت کی طرف سے ریلیف پیکج کے تحت رقوم کی تقسیم کے حوالے سے اجلاس کو بتایا گیا کہ تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق صوبے کے 22 لاکھ مستحق خاندانوں میں فی خاندان چھ ہزار روپے کے حساب سے 13 ارب روپے تقسیم کئے جائیں گے، اس مقصد کیلئے مستحق خاندانوں کی نشاندہی کا عمل مکمل کرلیا گیا ہے جبکہ پیکج کے تحت رقوم کی تقسیم کیلئے میکنزم ترتیب دیا جارہا ہے۔ اجلاس میں ان مستحق خاندانوں کی نشاندہی کے عمل پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے ہدایت کی گئی کہ رقوم کی تقسیم کے مقامات پر رش کو کم سے کم کرنے کیلئے لائحہ عمل ترتیب دیا جائے۔ اجلاس میں تعمیرات کی صنعت کو مخصوص ضابطہ کار کے تحت کھولنے کے لئے مختلف تجاویز پر غور کیا گیا۔ اجلاس میں سماجی رابطوں کو کم سے کم کرنے کے لئے حکومتی احکامات پر عملدرآمد کو مزید موثر بنانے، ہائی رسک علاقوں میں اس وباء کے پھیلاؤ کو کنٹرول کرنے اور جو جو علاقے اب تک کلیئر ہیں انہیں آنے والے دنوں میں بھی کلیئر رکھنے کیلئے مناسب اقدامات کی ضرورت پر زور دیا گیا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کورونا کے خلاف جنگ میں سول انتظامیہ اور سیکیورٹی اداروں کے درمیان مثالی روابط اور ان کے موثر کردار کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ حکومت اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم او ر عوام، سول انتظامیہ اور سیکیورٹی اداروں کے تعاون سے اس وباء کو شکست دینے میں کامیاب ہو جائیگی۔ انہوں نے محکمہ صحت کے حکام کوفرنٹ لائن پر خدمات انجام دینے والے طبی عملے کے لئے حفاظتی اشیاء کی فراہمی کو مزید بہتر بنانے اور صوبے میں مشتبہ مریضوں کے لئے ٹیسٹ کے استعداد کار کو مزید بڑھانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ ٹیسٹنگ کے استعداد کار کو بڑھانے کیساتھ ساتھ ٹیسٹ کی کوالٹی کو ہر لحاظ سے یقینی بنانے پر خصوصی توجہ دی جائے۔

پشاور (سٹاف رپورٹر)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کی زیر صدارت ٹاسک فورس اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے مشیر اطلاعات اجمل وزیر نے کہا کہ خیبر پختونخوا حکومت نے احساس پروگرام کے علاہ زکواۃ فنڈ سے بھی صوبے کے ایک لاکھ مستحق خاندانوں کو 12ہزار روپے دینے کی منظوری دی ہے اسکے علاوہ احساس پروگرام کے تحت پہلے مرحلے میں وفاقی حکومت کی طرف سے 22لاکھ خاندانوں کو 4مہینوں کے لئے 12ہزار روپے یکمشت ریلیف پیکج دیا جائے گا جبکہ دوسرے مرحلے میں انہی خاندانوں کو خیبر پختونخوا حکومت کی طرف سے تین مہینوں کے 6ہزار روپے یکمشت فراہم کی جائینگے ریلیف پیکج انتہائی شفاف طریقے سے آن لائن دیا جائیگا۔ اجلاس میں وزیر صحت کورکمانڈر، آئی جی پولیس، چیف سیکرٹری اور دیگر اعلی حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں وزیر اعلیٰ کو کورونا سے نمٹنے کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ طورخم بارڈر کے بارے میں اجلاس کو بتایا گیا کہ طورخم بارڈر 6سے 9اپریل تک چار دنوں کیلئے کھول دیا گیا ہے تا کہ ہمارے پھنسے ہوئے افغان بھائی واپس اپنے وطن جا سکیں۔ مشیر اطلاعات نے کہا کہ وزیر اعلیٰ نے خصوصی ہدایت کی ہے کہ صوبے میں موجود تبلیغی مہمانوں کا خصوصی خیا ل رکھا جائے تبلےٖغی بھائیوں کی بروقت سکریننگ اور ٹسٹنگ کو یقینی بنایا جائے تا کہ وہ جلد اپنے گھروں کو واپس جا سکیں۔ وزیر اعلیٰ نے فرنٹ لائن ورکرز کو تمام حفاظتی سامان کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ طبی عملہ اور دیگر فرنٹ لائن ورکرز ہمائے ہیرو ہیں اورانکی کوششوں کی بدولت ہم کورونا کو شکست دیں گے۔ مشیر اطلاعات اجمل وزیر نے کہا کہ وزیر اعلیٰ کی قیادت میں پورے صوبے کی مشینری کورونا سے نمٹنے کیلئے حرکت میں ہے۔ اجمل وزیر نے عوام سے اپیل کی ہے کہ جس طرح انہوں نے دیگر آفات کا مقابلہ کیا ہے اس جذبے کیساتھ کورونا کے خاتمے کیلئے بھی حکومت کا ساتھ دیں۔

مزید :

صفحہ اول -