کورونا وائرس کا مذاق اُڑانے والا پادری اس کا ہی شکار ہوکر مرگیا

کورونا وائرس کا مذاق اُڑانے والا پادری اس کا ہی شکار ہوکر مرگیا
کورونا وائرس کا مذاق اُڑانے والا پادری اس کا ہی شکار ہوکر مرگیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں کورونا وائرس کا مذاق اڑانے والا پادری اسی موذی وباءکا شکار ہو کر چل بسا۔ ڈیلی سٹار کے مطابق اس 66سالہ پاسٹر کا نام لینڈن سپریڈلین تھا جس کا تعلق امریکی ریاست نارتھ کیرولینا سے تھا۔ جب امریکہ میں کورونا وائرس پھیلنا شروع ہوا اور امریکی میڈیا نے اس کی رپورٹنگ شروع کی تو پاسٹر لینڈن میڈیا پر خوب برسے تھے اور کہا تھا کہ ”کورونا وائرس کے متعلق میڈیا کی کوریج پاگل پن ہے اور اس کے محرکات سیاسی ہیں۔ اس وباءکی خبروں میں کوئی حقیقت نہیں ہے۔میڈیا اس وباءکی آڑ میں صدر ٹرمپ کے خلاف پراپیگنڈا کر رہا ہے۔“

اس کے بعد انہوں نے اپنے فیس بک پیج پر بھی ایک میم پوسٹ کی جس میں کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کا سوائن فلو سے ہونے والی اموات کے ساتھ موازنہ کیا گیا تھا۔اس بیان کے بعد پاسٹرلینڈن نے تبلیغی مقصد کے لیے امریکہ میں 900میل کا سفر کیا اور ورجینیا سے گھومتے گھماتے نیو اورلینز میرڈی گراس پہنچ گئے۔ گزشتہ دنوں ان میں کورونا وائرس کی علامات ظاہر ہوئیں جو بعد ازاں شدت اختیار کر گئیں اور انہیں ہسپتال منتقل کر دیا گیا جہاں وہ گزشتہ شب چل بسے۔ پاسٹر لینڈن کی موت کے بعد ان کی صاحبزادی جیزی کا کہنا تھا کہ ”ہم نے کبھی سوچا بھی نہیں تھا کہ ہمارا باپ اس وباءکی وجہ سے موت کے منہ میں چلا جائے گا۔“

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -