بھارت کے خلاف میچ کے دوران آسٹریلوی کھلاڑی کوہلی کو خوش کرنے کی کوشش کیوں کرتے رہتے تھے؟ سابق کپتان مائیکل کلارک نے انتہائی شرمناک انکشاف کردیا

بھارت کے خلاف میچ کے دوران آسٹریلوی کھلاڑی کوہلی کو خوش کرنے کی کوشش کیوں ...
بھارت کے خلاف میچ کے دوران آسٹریلوی کھلاڑی کوہلی کو خوش کرنے کی کوشش کیوں کرتے رہتے تھے؟ سابق کپتان مائیکل کلارک نے انتہائی شرمناک انکشاف کردیا

  

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کے خلاف میچوں میں آسٹریلوی کھلاڑی بھارتی کپتان ویرات کوہلی کو خوش کرنے کی کوشش کیوں کرتے رہتے تھے اور بھارت کے خلاف ان کی کارکردگی کیوں ناقص ہو جاتی تھی؟ سابق آسٹریلوی کپتان مائیکل کلارک نے اس حوالے سے انتہائی شرمناک انکشاف کر دیا ہے۔ خلیج ٹائمز کے مطابق مائیکل کلارک نے کہا ہے کہ ”آسٹریلوی کھلاڑیوں کو اپنے آئی پی ایل کے کروڑوں ڈالر کے معاہدے منسوخ ہونے کا خوف ہوتا تھا جس کی وجہ سے وہ ویرات کوہلی کو خوش کرنے کی کوشش کرتے رہتے تھے اور اسی کے نتیجے میں ان کی گیم بھارت کے خلاف نرم پڑ جاتی تھی۔“

مائیکل کلارک نے بگ سپورٹس بریک فاسٹ شو میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ”آسٹریلوی کرکٹ ایک ایسے دور سے گزری ہے جب ہمارے کھلاڑی دوران میچ ویرات کوہلی اور دیگر بھارتی کھلاڑیوں کو سلیجنگ کرنے سے ڈرتے تھے۔ انہیں خوف ہوتا تھا کہ اگر انہوں نے ایسا کیا تو ان کے آئی پی ایل کے کنٹریکٹ منسوخ ہو سکتے ہیں۔ہر شخص جانتا ہے کہ کرکٹ کے کھیل میں مالی پہلو سے عالمی سطح پر اور آئی پی ایل کے لیول پر بھارت کتنا طاقتور ہے۔ میرے خیال میں صرف آسٹریلوی کھلاڑی ہی نہیں، بلکہ کچھ وقت کے لیے باقی ممالک کی ٹیمیں بھی اسی وجہ سے بھارتی ٹیم کے ساتھ نرم رویہ رکھنے پر مجبور رہیں۔کھلاڑیوں کے آئی پی ایل میں لاکھوں ڈالرز کے معاہدے ہوتے تھے۔ سب جانتے تھے کہ آئی پی ایل کھیل کر وہ 6ہفتوں میں 10لاکھ ڈالر یا 15لاکھ ڈالر کما سکتے ہیں چنانچہ کوئی بھی اس موقع کو کیوں گنوانا چاہے گا۔“

مزید :

کھیل -