حکومت نے ماہانہ تنخواہوں پر ٹیکس چھوٹ کی حد بڑھا دی

حکومت نے ماہانہ تنخواہوں پر ٹیکس چھوٹ کی حد بڑھا دی

کراچی (اکنامک رپورٹر) تنخواہ دار طبقے کے لئے خوشخبری، ماہ جولائی سے تینتیس ہزار تین سو تینتیس روپے ماہوار تنخواہ داروں کو انکم ٹیکس میں مکمل چھوٹ حاصل ہوگی۔ سالانہ چھ ہزار روپے کی بچت ہوگی۔ فنانس بل دو ہزار بارہ میں انکم ٹیکس سلیبس سترہ سے کم کرکے چھ کر دئے گئے ہیں، ساتھ ہی ٹیکسوں کی شرح میں نمایاں کمی سے یکم جولائی سے کم آمدنی اور متوسط طبقے کے تنخواہ دار افراد کو قابل ذکر ریلیف ملے گا۔ حکومت نے ماہانہ تنخواہوں پر ٹیکس چھوٹ کی حد انتیس ہزار ایک سو چھیاسٹھ روپے سے بڑھا کر تینتیس ہزار تین سو تینتیس روپے کردی ہے، جبکہ ماہانہ پچاس ہزارروپے تک تنخواہ پانے والے افراد پر سالانہ دس ہزار روپے انکم ٹیکس عائد ہوگا۔ جس سے انہیں سترہ ہزار روپے ریلیف حاصل ہوگا۔ اسی طرح ماہانہ ساٹھ ہزار روپے تک تنخواہ پرانکم ٹیکس کٹوتی تینتالیس ہزار دو سو روپے سے کم کر کے سولہ ہزار روپے کر دی گئی ہے۔ چھیاسٹھ ہزار چھ سو سڑسٹھ روپے تک ماہانہ تنخواہ پر ساٹھ ہزار روپے سالانہ کے بجائے بائیس ہزار پانچ سو روپے انکم ٹیکس کاٹا جائے گا۔ جس سے انہیں ساڑھے سینتیس ہزار روپے بچت ہوگی۔

مزید : کامرس