کوثرناگ یاترا ’مذہبی و تمدنی جارحیت‘ہے،ماحولیاتی اعتبار سے تباہ کن ثابت ہو گی،بھارت نواز نیشنل کانفرنس

کوثرناگ یاترا ’مذہبی و تمدنی جارحیت‘ہے،ماحولیاتی اعتبار سے تباہ کن ثابت ...

  

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میںبھارت نواز نیشنل کانفرنس کے نام نہاد اسمبلی کے رکن ڈاکٹر سید بشیر احمد ویری نے کوثر ناگ یاترا کو ’مذہبی و تمدنی جارحیت‘ قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ یاترا سے مقبوضہ علاقے کے ماحول پر تباہ کن اثرات پڑیں گے ۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق سید بشیر احمد ویری نے جو نام نہاد اسمبلی کی ماحولیاتی کمیٹی کے سربراہ بھی ہیں نے ایک بیان میں کوثر ناگ یاترا کے حوالے سے بزرگ حریت رہنماءسید علی گیلانی کے موقف کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ یہ یاترا ماحولیاتی اعتبار سے تباہ کن ہوگی اور اس یاترا پر پنڈتوں کی طرف سے پروپیگنڈا مہم چلائی جارہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کوثر ناگ اور دیگر ماحولیاتی طور حساس علاقوں میں یاترا شروع کرنے کے تباہ کن اور موسم پر انتہائی شدید منفی اثر ات پڑ سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف بھارتی حکومت گنگوتری اور کیدارناتھ میں یاتریوں کی بڑھتی ہوئی تعداد سے پریشان ہے اور وہاں رش کم کرنے کیلئے قواعد استوار کرنے کی بات کی جاتی ہے لیکن امرناتھ یاترا کے حوالے سے بالکل مختلف پیمانے اپنائے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ امرناتھ جس مقام پر واقع ہے وہ ماحولیاتی اعتبار سے انتہائی حساس ہے اور وہاں انسانی مداخلت کے اثرات ہم صاف دیکھ رہے ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -