راولپنڈی چیمبر نے آئی ڈی پیز کیلئے لاکھوں روپے کی ادویات پمز کے سپردکردیں

راولپنڈی چیمبر نے آئی ڈی پیز کیلئے لاکھوں روپے کی ادویات پمز کے سپردکردیں

  

راولپنڈی(کامرس ڈیسک)راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے شمالی وزیرستان متاثرین کے لئے لاکھوں روپے مالیت کی ادویات پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز(پمز) کے سپرد کر دیں پمز کی طرف سے وزیر مملکت برائے کیپٹل ایڈ منسٹریشن بیرسٹر عثمان ابراہیم اور ایڈ منسٹریٹر پمز ڈاکٹر الطاف نے ادویات وصول کیں جبکہ چیمبر کی طرف سے صدرچیمبر ڈاکٹر شمائل داﺅد آرائیں ، سینئر نائب صدر ملک شاہد سلیم، نائب صدر محمد عالم چغتائی ،چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے فارما سوٹیکل عثمان شوکت، پرویز احمد وڑائچ، رکن مجلس عاملہ بدر ہارون اور چوہدری ثنا اللہ نے ادویات سے بھر اٹرک پمز انتظامیہ کے حوالے کیا۔ اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے راولپنڈی چیمبر نے پہلے ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مل کر متاثرین کی مالی مدد کی اور اب پمز انتظامیہ کی اپیل پر متاثرین کےلئے لاکھوں روپے مالیت کی قیمتی ادویات فراہم کی ہیں

جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ چیمبر اس مشکل وقت میں اپنے ہم وطن بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑا ہے اور ملک کے دیگر چیمبرز کو بھی راولپنڈی چیمبر کی تقلید کرنی چاہیے تا کہ اس بحران سے جلد از جلد نمٹا جا سکے ۔ اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے راولپنڈی چیمبر کے صدر ڈاکٹر شمائل داﺅد نے کہا کہ چیمبر نے ہر مصیبت میں اپنے متاثرہ بھائیوں کی مدد کی ہے اور اس بار شمالی وزیرستان کے آئی ڈی پیز جنھوں نے ملک کے امن کے لئے اپنا گھر بار چھوڑا کو ہم سب کی توجہ کی ضرورت ہے ، حکومت اور پاک فوج اپنے تمام وسائل کو بروئے کار لا رہے ہیں لیکن یہ اکیلا حکومت کا کام نہیں ،عوام کو اور خاص طور پر کاروباری برادری کو آگے آنا ہو گا اور اپنے وسائل سے ان متاثرین کی مدد کرنی ہو گی ۔صدر چیمبر نے کہاکہ ادویات کی کمی سے آئی ڈی پیز مختلف قسم کی بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں ،اتنی بری تعداد میں لوگوں کی ضروریات پوری کرنا حکومت یا فوج کا نہیں بلکہ عوام کی بھی ذمہ داری ہے ،حالیہ ادویات کی فراہمی میں فارماسوٹیکل سیکٹر سے تعلق رکھنے والے ممبرز نے دل کھول کر حصہ ڈالا ہے جس پر اُن کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں،انہوں نے وزیر مملکت اور پمز سٹاف کو مستقبل میں بھی مل کر کام کرنے کی دعوت دی اور کہا کہ متاثرین کے لئے پمز اپنی ضرورت کی ادویات چیمبر کو بتائے تا کہ ایسی ادویات فراہم کی جا سکیں جو وہاں پر کام بھی آ سکیں ۔

مزید :

کامرس -