کرکٹ ٹیم کی کارکردگی کا عدم تسلسل،22سال میں 27 کوچ تبدیل

کرکٹ ٹیم کی کارکردگی کا عدم تسلسل،22سال میں 27 کوچ تبدیل

  

لاہور(این این آئی)پاکستان کرکٹ بورڈ نے گزشتہ 22 سال میں 27 کوچز تبدیل کیے جس کے باعث پاکستان ایک مضبوط کرکٹ ٹیم سے محروم رہا میڈیا رپورٹ کے مطابق سری لنکا کے خلاف گال ٹیسٹ میں وقاریونس دوسری مرتبہ قومی کرکٹ ٹیم کے کوچ کی حیثیت سے اپنے فرائض سنبھال لئے پاکستان کرکٹ بورڈ میں سیاست کے باعث عہدوں اور اختیارات کی جنگ نے پاکستان کرکٹ کو بری طرح متاثر کیا ۔چیئرمین سے لے کر کرکٹ ٹیم کے مختلف کپتان اور کوچز بھی اس سیاست کی بھینٹ چڑھتے رہے ہیں خصوصاََ کوچ کا عہدہ اس حوالے سے سب سے زیادہ زیر عتاب رہا ۔

1992 کے ورلڈ کپ کے بعد سب سے زیادہ 27 مرتبہ قومی کرکٹ ٹیم کے کوچ کو بدلا گیااسی عرصے میں بھارت نے صرف 10،انگلینڈ نے 9، آسٹریلیا نے 7 بار کرکٹ ٹیم کے کوچ کو تبدیل کیا ۔انتخاب عالم سب سے زیادہ 5 مرتبہ پاکستان کرکٹ ٹیم کے کوچ رہے اور ان کے دور میں پاکستان نے 1992 کا ورلڈکپ بھی جیتا تھا تاہم اسی سال انہیں فارغ بھی کر دیا گیا تھا۔سابق کپتان جاوید میانداد 3 مرتبہ کوچ کے عہدے پر فائز ہوئے جبکہ رچرڈ پائی بس ،باب وولمر ،جیف لاسن اور ڈیو واٹمور کے ذریعے غیر ملکی کوچز کے تجربے بھی کیے گئے جو زیادہ کامیاب نہیں رہے۔وقار یونس دوسرے دور میں کامیاب ہو کر پاکستان کرکٹ کو کامیابی کی شاہراہ پر گامزن کریں گے یا پھر کوچ کی تبدیلی کا یہ سلسلہ جاری ہے رہے گا اس بات کا فیصلہ آنے والا وقت کرے گا۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -