73 سالہ بزرگ انشورنس کمپنی کیخلاف ہر جانے کا مقدمہ جیت کر بھی پریشان

73 سالہ بزرگ انشورنس کمپنی کیخلاف ہر جانے کا مقدمہ جیت کر بھی پریشان
 73 سالہ بزرگ انشورنس کمپنی کیخلاف ہر جانے کا مقدمہ جیت کر بھی پریشان

  


سان فرانسسکو (نیوز ڈیسک) امریکہ کے ایک 73 سالہ بزرگ نے ایک انشورنس کمپنی کے خلاف ہر جانے کا مقدمہ توجیت لیا لیکن اسے ہرجانے کی قم کچھ ایسے انداز میں ادا کی گئی کہ بیچارہ خوش ہونے کی بجائے مزید پریشان ہوگیا۔ اینڈرس کریسکو نے ایڈریاناز انشورنس سروس پر الزام عائد کیا تھا کہ اس کے ایک ملازم نے اس پر حملہ کیا تھا اور اس کے بدلے 21000 ڈالر (تقریباً 2100000 پاکستانی روپے) ہرجانے کا دعویٰ کیا تھا۔ عدالت نے فیصلہ اینڈرس کے حق میں دے دیا جس پر کمپنی رقم ادا کرنے پر مجبور ہوگئی لیکن منتظمین کر بزرگ پر سخت غصہ تھا جس کا اظہار انہوں نے رقم کی ادائیگی کے وقت کیا۔ اینڈرس نے بتایا کہ کمپنی کے ملازم ایک ویگن میں سکوں سے بھرے ہوئے پانچ بڑے گیلن لائے اور اس کے سامنے پھینک کر چلے گئے۔ بیچارے بزرگ کا کہنا ہے کہ 21000 ڈالر کے سکے دیکھ کر وہ مزید ذہنی صدمے کا شکار ہوگیا ہے کہ ان کو کسی بھی مناسب مقصد کیلئے استعمال کرنا عملی طور پر ناممکن ہے، اس نے کمپنی کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ اسے اپنے گاہکوں اور بزرگ شہریوں سے اچھے طریقے سے پیش آنے کی تمیز بالکل بھی نہیں ہے اور اس بدسلوکی پر شدید احتجاج کیا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -