عمران حد سے آگے نہ بڑھیں ،گیم ہاتھ سے نکل گئی تو نقصان ہو گا،مذہبی رہنمائ

عمران حد سے آگے نہ بڑھیں ،گیم ہاتھ سے نکل گئی تو نقصان ہو گا،مذہبی رہنمائ

  

لاہور(رپورٹنگ ٹیم)مذہبی جماعتوں کے رہنماﺅں جماعت اسلامی ڈپٹی سیکرٹری جنرل فرید احمد پراچہ اور جمعیت علمائے اسلام پاکستان (ف) کے مرکزی رہنما مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا ہے کہ عمران خان اور طاہرالقادری حد سے آگے نہ بڑھیں اگر ان کے ہاتھ سے گیم نکل گئی تو پھر جمہوریت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچنے کا خدشہ موجود ہیں اور وزیر اعظم بھی درمیان راستہ نکالنے میں اپنا کردار ادا کریں وزیر اعظم کے استعفے اور نئے انتخابات کا وقت نہیں ہے ۔انقلاب اور آزادی مارچ کی وجہ سے جمہوریت کو نقصان پہنچا تو ذمہ دار مارچ والے ہی قرار پائیں گے اس امر کا اظہار انہوں نے مقبول عام سلسلہ ایشوءآف دی ڈے میں اظہار خیال کرتے ہوئے کیا۔اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے فرید پراچہ نے کہا کہ جمہوریت کو ڈی ریل نہیں ہونے دیں گے احتجاج اور مارچ سب کا حق ہے لیکن اس سسٹم کو نقصان نہیں پہنچنا چاہیے ۔وزیر اعظم کی تبدیلی اور جمہوریت گرانے کے کے حق میںنہیں،ہاں نظام ضرور بدلنا چاہیے اس کے لئے پارلیمنٹ اور پارلیمنٹ سے باہر جماعتوں کی مشاورت سے فیصلے کرنے ہونگے۔ جمعیت علمائے اسلام پاکستان (ف) کے مرکزی رہنما مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ ملک احتجاجی مظاہر وں اور دھرنوں کا متحمل نہیں ہے عمران خان سے خیبر پختونخواہ حکومت نہیں چلی جس کی وجہ سے وہ یہاں سے فرار ہونا چاہتے ہیں اور اس مقصد کے حصول کے لئے وہ جمہوریت کے ڈی ریل کرنے کی خواہش لئے لانگ مارچ اور دھرنوں کی سیاست پر اتر آئے ہیں ہم انہیں بھاگنے نہیں دیں نئے انتخابا ت اور وزیر اعظم کا استعفے مسائل کا حل نہیں ۔پارلیمنٹ میں بیٹھ کر مسائل حل کرنے پر توجہ دینی چاہیے ۔ جمعیت علمائے اسلام پاکستان (ف) کے ترجمان مولانا امجد نے کہا کہ ملک پہلے ہی بہت سے بحرانوں کا شکار ہے مذید بحرانوں کا متحمل نہیں ہوسکتا ۔یہ وقت دھرنوں اور احتجاج کانہیں مل بیٹھ کرمثبت فیصلے کرنے اور ملک کو بحرانوں سے نکالنے کا ہے عمران خان عوامی مسائل سے توجہ ہٹانے کے لئے نئے انتخابات کا ایشوءاٹھا رہے ہیں اس کے پس پردہ کوئی غیر ملکی ایجنڈ ا لگتا ہے ۔

مزید :

صفحہ اول -