کرنٹ سے جاں بحق ہونے والا نوجوان سپرد خاک پولیس نے واپڈا افسروں کے خلاف مقدمہ درج کر لیا

کرنٹ سے جاں بحق ہونے والا نوجوان سپرد خاک پولیس نے واپڈا افسروں کے خلاف ...

  

لاہور(کرائم سیل)شاہدرہ کے علاقہ میں واپڈا کی غفلت سے کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہونے والے نوجوان کو سپرد خاک کر دیا گیا۔پولیس نے واقعہ کا ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے لیسکو کے متعلقہ ایکسیئن او ر ایس ڈی او کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔دوسری جانب کرنٹ لگنے سے ہلاک ہونے والے نواز کی جھلسنے والی بہن کی طبیعت سنبھل نہ سکی۔پولیس تاحال ملزمان کو پکڑنے میں ناکام رہی ہے۔اہل محلہ کا پولیس اور واپڈا کے خلاف احتجاج ملزمان کو جلد پکڑنے کا مطالبہ۔واپڈا کی بے حسی کے باعث گزشتہ ایک ماہ میں 3افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔تفصیلات کے مطابق شاہدرہ کے لاجپت روڈ پر منگل کے روز گلی میں سے گزرنے والی مین بجلی کی تار ٹوٹ کر دو گھروں کے باہر لگی لوہے کی کھڑکیوں پر جا گری،جس سے دونوں گھروں کے کمروں میں کرنٹ آنے لگااور آگ بھڑک اٹھی۔جس کی وجہ سے کمرے میں موجود نواز کرنٹ لگنے سے شدید جھلس گیا اس کو بچانے کے لیے اس کی بہن اور بیوی آگے بڑھیں تو اس کی بہن نفیسہ کرنٹ کی زد میں آگئی جبکہ نواز کے چچا کے گھر میں موجود دو کمسن بچے بھی کرنٹ کی زد میں آگئے۔تمام زخمیوں کو فوری طبی امداد کے لیے قریبی ہسپتال میں لے جایا گیا جہاں نواز زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیاجس کو سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں گزشتہ روز سپرد خاک کر دیا گیا۔نواز کے بھائی نے نمائندہ ’’پاکستان ‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ نواز کی 4ماہ پہلے شادی ہوئی تھی ۔میرے بھائی کی ہلاکت واپڈا کی غفلت کی وجہ سے ہوئی ہے ،اعلی ٰحکام انصاف دلائیں جبکہ اہل محلہ نے واپڈا اور پولیس کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ ایک ماہ میں یہ تیسری ہلاکت ہے جو بجلی کے تار گرنے سے ہوئی ہے۔اعلٰی حکام اس علاقہ میں تاریں نئی لگوائیں۔

مزید :

علاقائی -