بلوچستان میں حکومت کی تشکیل کا خفیہ معاہدہ منظر عا م پر آ گیا

بلوچستان میں حکومت کی تشکیل کا خفیہ معاہدہ منظر عا م پر آ گیا
بلوچستان میں حکومت کی تشکیل کا خفیہ معاہدہ منظر عا م پر آ گیا
کیپشن: Balochistan Assembly

  

کوئٹہ (ویب ڈیسک) مسلم لیگ (ن)، نیشنل پارٹی اور پختونخوا ملی عوامی پارٹی میں بلوچستان میں حکومت سازی کے حوالے سے ایک معاہدہ ہوا تھا جس کے تحت 5 سالہ دور میں اڑھائی سال عبدالمالک بلوچ وزیراعلیٰ بلوچستان ہوں گے جبکہ اڑھائی سال مسلم لیگ ن کے ثناءاللہ زہری وزیراعلیٰ ہوں گے۔ میڈیا رپو رٹ کے مطا بق عبدالمالک بلوچ نے ایک سال مکمل کر لیا ہے جبکہ ابھی ڈیڑھ سال باقی ہے، یہ معاہدہ گزشتہ سال مری میں ہوا تھا جس کا مقصد بلوچستان حکومت کی تشکیل میں ڈیڈلاک کو ختم کرنا تھا۔ اس سلسلے میںایم او یو پر محمود خان اچکزئی، حاصل بزنجو اور ثناءاللہ زہری نے اپنی اپنی جماعت کی طرف سے دستخط کئے تھے جبکہ چوہدری نثار، نواز شریف، شہباز شریف، عبدالقادر بلوچ اور عبدالمالک نے معاہدے کی نگرانی کی۔ ڈیل کے مطابق بلوچستان کے گورنر کی نامزدگی پختونخوا ملی عوامی پارٹی کرے گی جس کے تحت محمود خان اچکزئی کے بھائی محمد خان اچکزئی کو گورنر بنایا گیا۔ معاہدے کے تحت سپیکر اور سینئر وزیر مسلم لیگ ن کے ہوں گے۔ حکمران جماعت این پی کے ایک سینئر لیڈر نے معاہدے کی تصدیق کی ہے۔

مزید :

قومی -