دنیا کے جدید ترین طیارے کا دوران پرواز انجن فیل، مسافروں میں خوف وہراس

دنیا کے جدید ترین طیارے کا دوران پرواز انجن فیل، مسافروں میں خوف وہراس
دنیا کے جدید ترین طیارے کا دوران پرواز انجن فیل، مسافروں میں خوف وہراس

  

لندن (نیوز ڈیسک) ڈومینیکن ریپبلک سے مانچسٹر جانے والے جدید ترین جہاز بوئنگ 787 ڈریم لائنر کا انجن دوران پرواز بند ہوگیا جس پر طیارے کو بحر شمالی اوقیانوس میں واقع جزائر Azores کے فوجی ہوائی اڈے پر ہنگامی لینڈنگ کرنا پڑی۔ یہ طیارہ بوئنگ کمپنی کی جدید ترین پیشکش ہے اور اسے ایئرلائن انڈسٹری کا مستقبل قرار دیا جارہا تھا لیکن حال ہی میں دو دیگر ایئرلائن کے ڈریم لائنر طیاروں کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑچکا ہے۔ طیارے پر سوار 288 مسافروں میں اس وقت خوف و ہراس پھیل گیا جب پائلٹ نے بتایا کہ تکنیکی خرابی کے باعث ایک انجن بند کرنا پڑے گا لیکن یہ تو صرف مسائل کا آغاز تھا۔ چار گھنٹے کی پرواز کے بعد طیارے کو سمندر میں واقع پرتگال کے فوجی ہوائی اڈے پر اتارا گیا اور تقریباً پانچ گھنٹے تک انہیں طیارے سے اترنے نہیں دیا گیا۔ مسافروں کے احتجاج پر بالآخر انہیں ایک تنگ کمرے میں بٹھایا گیا اور جب انہیں لے جانے کیلئے دوسرا جہاز آیا تو ٹیک آف سے پہلے ایک گھنٹہ پھر طیارے میں انتظار کرنا پڑا۔ بالآخر یہ مسافر 11 گھنٹے 23 منٹ تاخیر کے ساتھ مانچسٹر پہنچ گئے۔ طیارے کا تعلق برطانوی تھامسن ایئر ویز سے ہے جو چارٹر پروازوں کی سہولت فراہم کرنے والی دنیا کی سب سے بڑی ایئرلائن ہے۔ ایئرلائن کا کہنا ہے کہ مسافروں کو تاخیر اور پریشانی اٹھانے کی وجہ سے 100 ڈالر (تقریباً 1000 پاکستانی روپے) فی مسافر ادا کئے جائیں گے۔

مزید :

بین الاقوامی -