ایران ،روس کا پانچ سالہ تجارتی معاہدہ

ایران ،روس کا پانچ سالہ تجارتی معاہدہ
ایران ،روس کا پانچ سالہ تجارتی معاہدہ

  

تہران (نیوز ڈیسک) ایران اور روس نے مغربی ممالک کی پابندیوں کا توڑ کرنے کیلئے آپس میں تجارت اور توانائی کا پانچ سالہ معاہدہ کرلیا ہے۔ روسی وزارت توانائی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ روسی وزیر توانائی الیکسانڈر نوواک اور ایرانی وزیر تیل بجان نامدار نے دونوں حکومتون کے درمیان پانچ سالہ مفاہمتی یادداشت پر دستخط کردئیے ہیں۔ اس معاہدے کے تحت تیل و گیس، تعمیرات، پاور سپلائی نیٹ ورک، مشینری اور تجارت کے شعبوں میں معاشی تعاون کو بڑھایا جائے گا، اس معاہدے نے دونوں ممالک کے درمیان کئی ارب ڈالر کے قتل کے معاہدے کی بھی بنیاد رکھ دی ہے۔ اس معاہدے کے تحت تیل کی تجارت کا حجم 2.35 ارب ڈالر (تقریباً دو کھرب پاکستانی روپے) تک ہوسکتا ہے۔ روسی حکومت کا کہنا ہے کہ ایران سے تیل کی روزانہ درآمد 500000 بیرل تک پہنچ سکتی ہے۔ واضح رہے کہ مغربی ممالک نے امریکہ کی قیادت میں ایران پر اقتصادی پابندیاں عائد کررکھی ہیں اور یوکرین کے تنازعہ کے بعد روس پر بھی پابندیاں عائد کی گئی ہے۔ روس اور ایران کے معاہدے سے امریکہ اور دیگر مغربی ممالک میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔

مزید :

بزنس -