ساحل سمندر پر رنگ رلیاں منانے والے ملائیشین نوجوان مشکل میں

ساحل سمندر پر رنگ رلیاں منانے والے ملائیشین نوجوان مشکل میں
ساحل سمندر پر رنگ رلیاں منانے والے ملائیشین نوجوان مشکل میں

  

کوالا لمپور (نیوز ڈیسک) ملائیشیا میں منعقد کئے جانے والے برہنہ سپورٹس میلے کی ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد پولیس اس میں شامل مردوں اور خواتین کی گرفتاری کیلئے حرکت میں آگئی ہے۔ سنگاپور سے تعلق رکھنے والے البرٹ پام نامی شخص نے انٹرنیٹ پر ایک ویڈیو جاری کی تھی جس میں 9 مرد اور 6 عورتیں مختلف کھیلوں میں شامل دکھائے گئے ہیں۔ ملائیشیاءکی ریاست پینانگ میں فلمائی گئی اس ویڈیو میں جو بھی کھیلیں دکھائی گئی ہیں سب میں کھلاڑی مکمل طور پر برہنہ ہوکر شامل ہیں۔ البرٹ کا کہنا ہے کہ یہ کھیلیں ایک ساحل پر منعقد کی گئیں اور ان کا مقصد جنسی لذت نہیں بلکہ صحتمند طرز زندگی کو فروغ دینا ہے۔ ان کھیلوں میں دوڑ، جمناسٹک، چھلانگیں اور رقص کے مقابلے شامل تھے۔ ملائیشیا جیسے اسلامی ملک میں اس قسم کی حیا سوز حرکات کی ویڈیو سامنے آنے پر عوام میں اشتعال کی لہر دوڑ گئی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ برہنہ کھیلوں کا انعقاد کرنے والوں اور ان میں حصہ لینے والوں کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارے جارہے ہیں۔ دوسری جانب البرٹ کا کہنا ہے کہ لوگ ان کھیلوں کا غلط مطلب لے رہے ہیں۔ انہوں نے ایک انٹرویو میں بتایا کہ ننگے رہنا ایک فطری طرز زندگی ہے اور برہنہ حالت میں کھیل کود کا مقصد اس طرز زندگی کو لوگوں میں مقبول کرنا ہے۔ انہوں نے وضاحت کی کہ اس کا مقصد جنسی بے راہ روی کو فروغ دینا یا کسی کے جذبات مجروح کرنا نہیں تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -