اوباما کی بڑی بڑی باتیں جھوٹ پر مبنی ہیں، بھائی کا انکشاف

اوباما کی بڑی بڑی باتیں جھوٹ پر مبنی ہیں، بھائی کا انکشاف
اوباما کی بڑی بڑی باتیں جھوٹ پر مبنی ہیں، بھائی کا انکشاف

  

نیویارک (نیوز ڈیسک) امریکی صدر باراک اوباما کے سوتیلے بھائی مارک اوباما نے انکشاف کیا ہے کہ امریکی صدر نے اپنی مشہور زمانہ کتاب میں جو بڑی بڑی باتیں کی ہیں ان میں سے اکثر سفید جھوٹ ہیں اور وہ حقائق سے پردہ اٹھانے کیلئے اگلے ماہ اپنی کتاب منظر عام پر لارہے ہیں۔ امریکی صدر نے 1995ءمیں اپنی کتاب ”ڈریمز فرام مائی فادر“ میں اپنے والد کی شخصیت کو اپنے لئے اہم قرار دیا تھا اور بتایا تھا کہ ان کے خوابوں اور آرزوﺅں نے انہیں زندگی میں آگے بڑھنے میں مدد دی تھی۔ مارک اوباما کا کہنا ہے کہ صدر اوباما نے اپنے خاندان اور خصوصاً والد کے متعلق جو عظمت اور بلند کردار کا تاثر قائم کرنے کی کوشش کی ہے وہ نہ صرف غلط ہے بلکہ حقیقت کے بالکل خلاف ہے۔ مارک نے بتایا ہے کہ 1961ءمیں اوباما کی پیدائش کے بعد اس کے والد نے اس کی والدہ سٹینلی این کو طلاق دے دی۔ صدر اوباما کے والد نے اس کے بعد ایک گوری خاتون روتھ سے شادی کی جس میں مارک اور ڈیوڈ نے جنم لیا۔ مارک کا کہنا ہے کہ اس کا والد ایک بے رحم اور ظالم شخص تھا اور ساری رات کثرت سے شراب نوشی اور آوارہ گردی اس کا پسندیدہ مشغلہ تھا۔ مارک کا کہنا ہے کہ وہ اپنے خوفناک بچپن کو کبھی نہیں بھول سکتا کیونکہ اس کا اور صدر اوباما کا والد جب ساری رات شراب نوشی اور نشہ کرنے کے بعد گھر آتا تو اس کی ماں پر وحشیانہ تشدد کرتا اور ایک دفعہ تو اس نے بیچاری عورت کے گلے پر خنجر بھی رکھ دیا تھا۔ مارک نے یہ انکشاف بھی کیا کہ اس کے شرابی والد نے ایک دفعہ ایک شخص کو اپنی گاڑی کے نیچے کچل کر ہلاک کردیا اور اس کی موت بھی نشے کی حالت میں ڈرائیونگ کرتے ہوئے ہوئی۔ ان کا کہنا ہے کہ صدر اوباما کے دیگر جھوٹوں سے پردہ اٹھانے کیلئے ان کی کتاب "AN OMABA'S JOURNEY" 16 ستمبر سے بازار میں دستیاب ہوگی۔

مزید :

بین الاقوامی -