, طاہر خان نیازی کی غائبانہ نماز جنازہ

, طاہر خان نیازی کی غائبانہ نماز جنازہ

لاہور (نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ بار ایسو سی ایشن میں گزشتہ روز راولپنڈی میں فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج راولپنڈی طاہر خان نیازی کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی، جس میں مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ ، مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ، مسٹر جسٹس شاہد بلال حسن، مسٹر جسٹس علی اکبر قریشی، مسٹر جسٹس شاہد کریم، مسٹر جسٹس شاہد مبین، مسٹرجسٹس فرخ گلزار اعوان اور رجسٹرار حبیب اللہ عامر نے بھی شرکت کی ۔فاضل جج صاحبان کے علاوہ بار عہدیداروں اور وکلاء نے طاہر خان نیازی کی شہادت پر گہرے دکھ اور رنج کا اظہار کیا اور شہید کی روح کو ایصال ثواب کے لئے فاتحہ خوانی اور دعا بھی کی ۔

نماز جنازہ

لاہور (نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ بار نے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج طاہر خان نیازی کے بہیمانہ قتل کی پر زور مذمت کرتے ہوئے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کردیا ،گزشتہ روز صدر لاہور ہائیکورٹ بارپیر محمد مسعود چشتی کی زیر صدارت طاہر نیازی ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج (راولپنڈی )کے بہیمانہ قتل کے خلاف جنرل ہاؤس کا تعزیتی اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں سیکرٹری لاہور ہائیکورٹ بار بیرسٹر محمد احمد قیوم ، نائب صدر لاہور ہائیکورٹ بارایم عرفان عارف شیخ ، فنانس سیکرٹری لاہور ہائیکورٹ بار سید اختر حسین شیرازی کے علاوہ وکلاء کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ صدر لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن پیر محمد مسعود چشتی نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایڈیشنل سیشن جج طاہر خان نیازی حاضر سروس جج تھے جنہیں سوچے سمجھے منصوبہ کے تحت گھر کے اندر گھس کر شہید کیا گیا۔ انکی شہادت پر ملک بھر کی وکلاء برادری سراپا احتجاج ہے اور سوگوار ہے۔ جج صاحبان اور وکلاء کا ایسا رشتہ ہے جو ٹوٹ نہیں سکتا۔وکلاء نے ہمیشہ عدلیہ اور ججز کے تحفظ کیلئے قربانیاں دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر کی عدالتیں غیر محفوظ ہیں اور خوف و ہراس کے ماحول میں عدالتیں کام کر رہی ہیں۔ عدالتوں میں ججز، وکلاء اور سائلین کے تحفظ کو یقینی بنانا حکومت کا اولین فرض ہے۔ سیکرٹری لاہور ہائیکورٹ باربیرسٹر محمد احمد قیوم ،اللہ بخش گوندل ایڈووکیٹ سپریم کورٹ اور راشد لودھی ایڈووکیٹ ہائیکورٹ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ طاہر خان نیازی ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج انتہائی ایماندار اور قابل جج تھے وہ بغیر کسی دباؤ کے انتہائی دلیری سے میرٹ پر فیصلے کرتے تھے۔ ان کو گھر کے اندر گھس کر قتل کیا گیا اور لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن اس واقعہ کی پر زور مذمت کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں کسی کا جان و مال محفوظ نہیں بالخصوص جج صاحبان ، وکلاء اور سائلین عدالتوں میں اپنے آپ کو غیر محفوظ سمجھتے ہیں۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ عدالتوں کے اندر فول پروف سکیورٹی فراہم کی جائے اور جج صاحبان کیلئے 24گھنٹے سکیورٹی کے انتظامات کئے جائیں۔ جنرل ہاؤس نے قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی۔ قرارداد میں مطالبہ کیا گیا کہ لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج طاہر خان نیازی کے بہیمانہ قتل کی شدید مذمت کرتی ہے اور حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ شہید کے لواحقین کی مالی امداد کے ساتھ ساتھ انکے جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنائے۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کر کے انسداد دہشت گردی عدالت میں مقدمہ چلایا جائے۔ عدالتوں میں فول پروف سکیورٹی کے علاوہ جج صاحبان کو کل وقتی سکیورٹی فراہم کی جائے اور حساس معاملات میں وکلاء کو بھی حفاظت فراہم کی جائے۔

مزید : صفحہ آخر