کمپنی کے مالک نے ملازمین کی کم از کم تنخواہ 6لاکھ روپے مقرر کردی،لیکن پھر بھی۔۔۔

کمپنی کے مالک نے ملازمین کی کم از کم تنخواہ 6لاکھ روپے مقرر کردی،لیکن پھر ...
 کمپنی کے مالک نے ملازمین کی کم از کم تنخواہ 6لاکھ روپے مقرر کردی،لیکن پھر بھی۔۔۔

  

سان فرانسسکو(نیوزڈیسک)ایک امریکی کاروباری نے اپنے کمپنی کے ملازمین کی تنخواہ 6لاکھ روپے ماہوار مقرر کردی لیکن اس کا نتیجہ اسے بہت برے طریقے سے بھگتنا پڑ رہا ہے۔تفصیلات کے مطابق 31سالہ ڈین پرائس کا کہنا ہے کہ وہ اپنی کمپنی Gravity Paymentsکے 120ملازمین کی زندگی بہتر بنانا چاہتا ہے اور اس کی خواہش ہے کہ اس کے ملازمین بغیر کسی مالی پریشانی کے بآسانی کام کریں اور انہیں کبھی بھی پیسوں کی فکر لاحق نہ ہوتاہم اس کے اس اقدام کی وجہ سے اس کے دو بہترین ملازمین اور دوست اس کا ساتھ چھوڑ گئے۔صرف تین ماہ قبل ڈین کے اس اقدام کی وجہ سے اسے دنیا بھر میں سراہا گیا تھا اور اسے بین الاقوامی اخبارات نے کافی اہمیت دی تھی لیکن اب صورتحال تبدیل ہوتی ہوئی نظر آرہی ہے۔ڈین نے اپنی تنخواہ جو کہ ایک ملین ڈالر ہے کو بہت کم کردیا تھا تاکہ ملازمین کی بڑھی ہوئی تنخواہیں دی جاسکیں لیکن یہ نسخہ زیادہ کامیاب نہ ہوسکا۔اس کی قابل اعتماد ملازمہ میسی میکسٹر نے تمام لوگوں کی تنخواہیں بڑھائے جانے پر استعفیٰ دید یا ہے اور اس کاکہنا ہے کہ ڈین نے ان لوگوں کی تنخواہیں بھی بڑھا دیں جن کے پاس مہارت نہ تھی جو کہ ماہر لوگوں کے ساتھ زیادتی ہے۔اسی طرح ایک اور ملازم گرانٹ مورون نے بھی اسی وجہ سے مستعفیٰ ہوگیا۔ماہرین کا کہنا ہے کہ پرائس کے اس اقدام کی وجہ سے کئی کمپنی کو نئے گاہک تو ضرور ملے ہیں لیکن ان سے ایک سال تک منافع حاصل نہیں کیا جاسکتا اور یوں کمپنی کی مصیبتیں کم نہیں ہوسکتیں۔دوسری جانب کچھ قانونی پیچیدگیوں کی وجہ سے بھی اس کی کمپنی کوکافی بھاری رقم بھرنی پڑ سکتی ہے اور نوبت یہاں تک پہنچ گئی ہے کہ پرائس بے گھر ہوچکا ہے۔

مزید : صفحہ آخر