میٹرو بسوں کی ٹرالر ز کے ذریعے ملتان آمد، ریلوے گڈز ٹرینیں نظر انداز

میٹرو بسوں کی ٹرالر ز کے ذریعے ملتان آمد، ریلوے گڈز ٹرینیں نظر انداز

  

ملتان(جنرل رپورٹر)پنجاب حکومت نے بھی وفاقی حکومت کے احکامات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے ریلوے گڈز کو کام کے قابل نہ سمجھا ‘لاکھوں روپے کرایہ ادا کرکے میٹرو بسیں ٹرالروں کے ذریعے کراچی سے ملتان منگوالی گئیں جبکہ ریلوے گڈز ٹرینیں صرف کوئلہ اور حساس اداروں کی گاڑیاں لانے کے لئے رہ گئیں تفصیل کے مطابق ملتان میں اربوں روپے مالیت سے شروع ہونے والے میٹرو پراجیکٹ کے لئے والوو کمپنی کی18میٹر لمبی بسیں گزشتہ روز کراچی ڈرائی پورٹ سے ملتان پہنچ گئیں باخبر ذرائع (بقیہ نمبر24صفحہ12پر )

کے مطابق ایک بس کو ملتان پہنچانے کے لئے ٹرالر پر قریباً ایک لاکھ روپے خرچ آیا ہے جبکہ ملتان سے جانے والے سرکاری ملازمین کے خرچ اس سے علاوہ ہیں لیکن حکومت نے ریلوے کو خسارہ میں جانے کے باوجود اس قابل نہ سمجھا کہ میٹرو بسیں گڈز ٹرین کے ذریعے منگوائی جاتی ‘اگر ٹرین کے ذریعے یہ بسیں ملتان منگوائی جاتی تو ریلوے کو بھی لاکھوں روپے آمدن حاصل ہوتی اور حکومت کا کثیر سرمایہ بھی بچ سکتا تھا کیونکہ گڈز ٹرینوں کے ذریعے بسیں منگوانے پر بہت کم خرچ آتالیکن گڈز ٹرینیں تو صرف کوئلہ اور حساس اداوں کی بھاری بھر کم گاڑیاں لانے کے لئے رہ گئی ہیں اس بارے ’’پاکستان‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے ریلوے ملازمین کا کہنا تھا کہ جب حساس اداروں کی بڑی بڑی گاڑیاں مال بردار ٹرینوں کے ذریعے آسکتی ہیں تو میٹرو بسیں لانے میں کیا حرج تھاحکومت محکمہ کوخسارہ سے نکالنے کے لئے سامان کی زیادہ سے زیادہ ترسیل ریلوے کے ذریعے ممکن بنائے تاکہ اسے منافع بخش ادارہ بنایا جاسکے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -