پونچھ ہاؤس حکومتی عدم توجہی کا شکار، تحریک التوا اسمبلی میں جمع

پونچھ ہاؤس حکومتی عدم توجہی کا شکار، تحریک التوا اسمبلی میں جمع

  

لاہور( جنرل رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف کی رکن پنجاب اسمبلی سعدیہ سہیل رانا نے ایک تحریک التوائے کار پنجاب اسمبلی میں جمع کروا دی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ نجی اخبار کی خبر کے انگریز عہد کی اولین عمارت پونچھ ہاؤس حکومتی عدم توجہی کا شکار ہے تفصیلات کے مطابق پونچھ ہاؤس لاہور کی تاریخی عمارت کئی ایسی شخصیات سے جڑی ہے جنہوں نے تاریخ پر گہرے اثرات مرتب کئے پونچھ ہاؤس ایک رہائشی عمارت تھی جو 1849 میں تعمیر ہوئی مہاراجہ دلیپ سنگھ، لارڈ لارنس، راجہ جگت سنگھ اور راجہ پونچھ تک بیشتر اہم شخصیات کے نام اس تاریخی عمارت سے جڑے ہوئے ہیں اس عمارت کو یہ اعزاز بھی حاصل ہے کہ پانچ مئی 1931 کو آزادی ہند کے مشہور کردار بھگت سنگھ کا ٹرائل بھی اسی تاریخی عمارت میں ہوا تھا قیام پاکستان کے بعد یہ عمارت محکمہ انڈسٹریز کے زیر استعمال رہی وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ دیگر سرکاری دفاتر بھی اس میں منتقل ہو گئے عدم توجہی کے باعث بھوت بنگلے کا منظر پیش کرنے والی یہ عمارت اب بحالی کے مراحل میں ہے جب کہ ناقدین کہتے ہیں کہ محکمانہ مرمت کے نام پر اس عمارت کا ثقافتی اہمیت ختم کی جا رہی ہے ناقدین کہتے ہیں کہ اس عمارت کی تاریخی اہمیت کے پیش نظر اس ورثہ کی محفوظ لسٹ میں شامل کیا جائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -