خواتین کی زندگیوں کو تماشہ بنانیوالے سیاستدان قومی مجرم ہیں، سیمل راجہ

خواتین کی زندگیوں کو تماشہ بنانیوالے سیاستدان قومی مجرم ہیں، سیمل راجہ

  

لاہور ( آن لائن) پنجاب کے سابق وزیرقانون بشارت راجہ کی اہلیہ و سابق رکن پنجاب اسمبلی سیمل راجہ نے کہا ہے کہ سیاسی مقاصد کیلئے حقوق نسواں کے استعمال نے ملک کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ، نکاح ایک مقدس رشتہ ہے نام نہاد شرفاء نے اس کو بھی گالی بنا دیا،عائشہ گلا لئی، عائشہ احد سمیت شرفاء کی زیادتیوں اور نا انصافیوں کی بھینٹ چڑھنے والی تمام خواتین کیساتھ اظہار یکجہتی کرتی ہوں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔سیمل راجہ نے کہا کہ سیاسی وابستگی سے بالا تر ہو کر متاثرہ خواتین کی داد رسی کے بجائے ان کو کٹہرے میں کھڑا کر کے تذلیل کر نا قابل مذمت ہے۔انہوں نے کہا کہ خواتین کے تحفظ کا قانون تو بن گیا مگر قوانین بنانے والے خود ہی اس کی دھجیاں اڑا رہے ہیں جبکہ سیاسی جماعتوں میں خواتین کو ہراساں کرنے کے واقعات ہوتے ہیں مگرمنہ کھولنے پر الزامات کی بوجھاڑ کر کے کردار کشی کی جاتی ہے۔سیمل راجہ نے کہا کہ نام نہاد شرفاء کی خواتین سے شادیوں سے مکرنے کی مثالیں تو موجود ہیں لیکن مسلم لیگ ق کے رہنما بشارت راجہ نے طلاق دینے کے باوجود پری گل آغا کو گھر میں رکھ کر ایک نئی مثال قائم کر دی جو اسلامی اصولوں سے غداری سے مترادف ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ خواتین کی زندگیوں کو تماشہ بنانے والے سیاستدان قومی مجرم ہیں لہٰذا سپریم کورٹ عدالتی کمیشن بنا کرعمران خان، حمزہ شہباز اور راجہ بشارت سمیت خواتین کے ساتھ زیادتی اور نا انصافی کرنے والے تمام سیاستدانوں کے خلاف تحقیقات کا حکم دے۔اس موقع پر سیمل راجہ خواتین کے تحفظ کیلئے ایک غیر سیاسی تنظیم بنانے کا بھی اعلان کیا جو خواتین کے حقوق اور انہیں انصاف کی فراہمی کیلئے گلی گلی کریہ کریہ کام کرے گی۔

سیمل راجہ

مزید :

علاقائی -