اداروں کیساتھ ٹکراؤ کا حامی نہیں ، سازش سے جلد پردا اٹھاؤں گا : نوازشریف

اداروں کیساتھ ٹکراؤ کا حامی نہیں ، سازش سے جلد پردا اٹھاؤں گا : نوازشریف

  

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک 228 ایجنسیاں ) پاکستان مسلم لیگ(ن) کے قائد اورسابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ مجھے معلوم ہے کہ اس کے بعد آئندہ میرے ساتھ کیا ہونے والا ہے لیکن میں کسی کے سامنے اور نانصافی کیسامنے نہیں جھکوں گا ، جو سلوک میرے ساتھ ہو رہا ہے ماضی میں کسی کے ساتھ نہیں ہوا، احتساب کے نام پر استحصال کیا گیا ، جو جرم کیا ہی نہیں اس کی سزا دی گئی، قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتا ہوں اسی لیے عدالتی فیصلہ تسلیم کیا ،اداروں سے ٹکرا ؤکا حامی نہیں ہوں لیکن سازش سے جلدپردہ اٹھاؤں گا ، جو جرم کیا ہی نہیں اس کی سزا بھی دی گئی،ڈیڑھ سال تک بے رحمانہ احتساب، تین نسلوں کا حساب لیا گیا، ایک پائی کی کرپشن یا چوری ثابت نہیں ہوئی،ایمانداری کا یہی سرٹیفکیٹ لے کر عوام میں جاؤں گا، اربوں لوٹنے والے آج تک نہیں پکڑے گئے ، آئین توڑنے والوں کو سزا کیوں نہیں دی گئی،جمہوریت کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ، سویلین بالادستی کوتسلیم کیاجائے ۔پنجاب ہاؤس میں راولپنڈی، اسلام آباد کے تاجروں کے وفداور پارٹی رہنماؤں اورکارکنوں سے اظہارخیال کر تے ہوئے نوازشریف نے کہاکہ عوام نے مسلم لیگ( ن) کو بھرپور مینڈیٹ دیا ہے۔سویلین بالادستی کو تسلیم کیا جاناچاہیے جو سلوک میرے ساتھ ہو رہا ہے ماضی میں کسی کے ساتھ نہیں ہوا ،قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتا ہوں اسی لیے عدالتی فیصلہ تسلیم کیا تاہم عوام نے پاناما فیصلے کو تسلیم نہیں کیا ،عوام نے ہمیشہ مجھ سے والہانہ محبت کا اظہار کیا ہے۔کارکنوں کے اصرار پر جی ٹی روڈ سے لاہور جانے کا فیصلہ کیا ہے۔انہوں نے استفسارکیاکہ کیا پاناما کیس میں میرے ہی خاندان کا نام تھاجو جرم کیا ہی نہیں اس کی سزا دی گئی۔ احتساب کے نام پر میرے خاندان کو نشانہ بنایا گیااور استحصال کیا گیامعلوم ہے میرے ساتھ آگے کیاہونے والاہے مگر جھکوں گا نہیں ۔اربوں روپے لوٹنے والے آج تک نہیں پکڑے گئے آئین توڑنے والوں کو سزا کیوں نہیں دی گئی؟ انہوں نے کہاکہ پاکستان کامستقبل جمہوریت میں پنہاں ہے۔جمہوریت کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ تاجر برادری نے نوازشریف سے یکجہتی کااظہارکیا۔واضح رہے سابق وزیر اعظم نواز شریف سے پنجاب ہاؤس میں سیاسی و عوامی حلقوں کی سرکردہ شخصیات کی ملاقاتیں جاری ہیں۔ نواز شریف نے کہا کہ عوام نے مینڈیٹ دیا ہے لہٰذاسویلین بالادستی کو تسلیم کیا جائے۔ قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتا ہوں اس لئے عدالتی فیصلے کو تسلم کیا،پاکستان کی سیاسی تاریخ میں آمریت کی اوسط عمر 9 جبکہ منتخب وزیر اعظم کی ڈیڑھ سال بنتی ہے مسلم لیگ (ن) کو پاکستانی عوام نے مینڈیٹ دیا ہے ، عوامی مینڈیٹ کا احترام کیا جائے، مجھے کسی عہدے یا کرسی کی کوئی خواہش نہیں ہے مگر نا انصافی کے سامنے میں سر نہیں جھکاؤں گا۔ احتساب کے نام پر میرا استحصال کیا جا رہا ہے۔پاکستان کی سیاسی تاریخ کے70سال میں35سال تک 4ڈکٹیرز نے اقتدار پر قبضہ رکھا جبکہ باقی 35سال میں18وزرائے اعظم گھر بھیجے گئے۔ڈیڑھ سال سے بے رحمانہ احتساب کے باوجودایک پائی کی خوردبردثابت نہیں ہوسکی جبکہ مجھ پر مقدمہ ایک بیٹے کو پیسے بھیجنے پر چلایا گیا اور نا اہلی دوسرے بیٹے سے ڈیڑھ لاکھ روپے نہ لینے پر ہوئی ہے۔ عوام کی محبت اور جذبہ میرا سرمایہ ہے ،یہی ایماندار ی کا سرٹیفیکٹ لے کر عوام کے پاس جاؤں گا۔سابق وزیر اعظم کا مزید کہنا تھا کہ ملک میں جمہوری قوتوں کو ہمیشہ انتقام کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے ، آئین توڑنے والوں اور قوم کے اربوں روپے لوٹنے والوں کو کوئی پوچھتا تک نہیں ، باقی لوگوں کا احتساب کب اور کون کرے گا؟ مجھے معلوم ہے کہ اس کے بعد میرے ساتھ کیا ہونے والا ہے لیکن میں کسی کے سامنے جھکوں گا نہیں۔

نوازشریف

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی،آن لائن)مسلم لیگ(ن) کے قائد وسابق وزیراعظم محمد نواز شریف سے پارٹی رہنماؤں نے ملاقاتیں کیں جن میں ملکی سیاسی صورتحال سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ مسلم لیگ(ن)کے رکن قومی اسمبلی چودھری نثار علی خان، سینیٹر پرویز رشید، نومنتخب سینیٹرڈاکٹر آصف کرمانی، لیگی رکن قومی اسمبلی دانیال عزیز اور اسلام آباد میٹرو پولیٹن کارپوریشن کے میئر شیخ انصر عزیز نے پنجاب ہاؤس میں نوازشریف سے ملاقاتیں کیں ۔ملاقات میں ملکی سیاسی صورتحال اور دیگر امور پر تبادلہ خیال سمیت بدھ کو محمد نواز شریف کے جی ٹی روڈ کے ذریعے لاہور جانے کے حوالے سے انتظامات پر مشاورت کی گئی۔

ملاقاتیں/مشاورت

مزید :

صفحہ اول -