مرید کے: نالہ بھیڑ میں پڑنے والا شگاف 5روز بعد بھی پر نہ کیا جاسکا

مرید کے: نالہ بھیڑ میں پڑنے والا شگاف 5روز بعد بھی پر نہ کیا جاسکا

  

مریدکے ( نامہ نگار)ڈی سی او شیخوپورہ اور محکمہ انہار کی رات دن کی محنت کام نہ آسکی ۔تمبولی کے قریب نالہ بھیڈ میں پڑنے والہ شگاف پانچ روز گزرنے کے باوجود پر نہ کیا جا سکا۔پانی کا پھیلاو بڑھنے لگا۔قریبی آبادیوں والے پریشان ۔ متاثرین کا وزیر اعلیٰ پنجاب سے صورتحال کا جا ئزہ لینے کا مطالبہ ۔بتایا جاتا ہے کہ مریدکے تحصیل میں سے گزرنے والے نا لہ بھیڈ میں پڑنے والے شگاف نے جہاں اہل علاقہ کیلئے قیامت برپا کی ہے وہیں اس نے انتظامیہ کو بھی تگنی کا ناچ نچا دیا ہے اے سی مریدکے رات دن اپنی تحصیل کا سارا عملہ لئے اس شگاف کو پر کرنے میں لگے ہو ئے ہیں مگر یہ شگاف سو فٹ سے نہ صرف زائد ہو گیا بلکہ اس کا پانی کسانوں کی ہزاروں ایکڑ پر کھڑی فصلیں تباہ کر نے کے علاوہ اب نزدیکی آبادیوں راجپورہ۔لدھے والا ورکاں ۔خرابہ ۔باہمن والا۔لوہارانوالی۔باوے والی ۔ اور ڈیرہ سندھیاں کے رقبہ میں داخل ہو تا ہوا اب گھروں کے قریب پہنچ چکا ہے ۔یہاں تک کہلدھے والا گاوں جس کے چاروں طرف پانپ کی وجہ سے زمینی راستے منقطع ہو چکے ہیں میں کھانے پینے کی اشیا اور جانوروں کے چارے کیلئے بھی کافی مشکلات کا سامنا ہے۔متاثرین کا کہنا ہے کہ انتظامیہ کے کئے گئے اقدامات ناکافی ہیں اس لئے وزیر اعلیٰ پنجاب محکمہ انہار کے ان افسران کیخلاف خصوصی نوٹس لیں جنکی لا پر واہی اور غفلت کا نتیجہ ان کو بھگتنا پڑتا ہے حالانکہ ہر سال اس نالہ ڈیک اور نالہ بھیڈ میں کہیں نہ کہیں سے کنارے کمزور ہونے کے باعث شگاف پڑ جاتا ہے اور متعلقہ محکمے لوگوں کے نقصانات کاتخمینہ لگانے اور اپنے بل کھرے کرنے میں لگ جاتے ہیں ۔جبکہ متاثرین کا احتجاج بھی بے کار ہوتا ہے۔اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ وزیر اعلیٰ جلد از جلد اس بابت نوٹس لیں اور محکمہ کو کروڑوں روپے کی کرپشن کا ٹیکہ لگانے والوں کے خلاف بھی تادیبی کاروائی حکم صادر فرمائیں۔

مزید :

علاقائی -