ایم ڈی اے شعبہ انجینئرنگ کی نااہلی، سڑک کشادگی کا منصوبہ شروع نہ ہو سکا

ایم ڈی اے شعبہ انجینئرنگ کی نااہلی، سڑک کشادگی کا منصوبہ شروع نہ ہو سکا

  

ملتان( ملک اعظم سے) ملتان ڈویلپمنٹ اتھارٹی ‘ ایم ڈی اے چوک سے ڈیرہ اڈا چوک تک دو رویہ سڑک کا پروجیکٹ بروقت شروع کرنے میں بری طرح ناکام ہوئی ‘ ایم ڈی اے کے شعبہ انجینئرنگ کے افسر نے زیادہ تر وقت میٹنگز میں گزارتے رہے جس کیوجہ سے اس منصوبہ کی کاسٹ میں 35 کروڑ روپے کا اضافہ ہوگیا ہے ‘ یہ اضافہ صرف لینڈ ایکوائر کرنے کی صورت میں ہوا ہے جبکہ سول ورک کی کاسٹ بھی بڑھنے کا خدشہ پیدا ہوگیا ۔ پی سی ون کے مطابق اس کی کاسٹ 57 کروڑ روپے سے زائد رکھی ہے ‘ اس میں 40 کروڑ روپے لینڈ ایکوزیشن کیلئے مختص کیے گئے ‘ ایم ڈی کی جانب سے کنسلٹنٹ ہائیر کرنے کیلئے درخواستیں مارچ 2017 میں طلب کی گئیں جبکہ جون 2017 میں کنٹریکٹرز سے سول ورک کیلئے درخواستیں طلب کی گئیں ۔ معلوم ہوا ہے ایم ڈی اے کا شعبہ انجینئرنگ گزشتہ 5 ماہ سے نہ تو کنسلٹنٹ ہائیر کر سکا اورنہ ہی کنٹریکٹر کو ٹینڈرز الاٹ کر سکا ۔ بتایا گیا ہے لینڈ ایکوزیشن کلکٹر کی جانب سے جب 4(1) کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا تو اس وقت مالی سال ختم ہو چکا تھا ‘ اس نوٹیفکیشن کے بعد جب ڈسٹرکٹ کلکٹر آفس نے اس پروجیکٹ کیلئے اکیوائر ہونیوالی مجوزہ اراضی کا تخمینہ تیار کیا تو ویلوایشن ٹیبل کے مطابق اراضی کی قیمت 75 کروڑ روپے مختص کی گئی ۔ اس قیمت میں مارکیٹ ریٹ شامل نہیں کیا گیا جبکہ ایم ڈی اے کے پی سی ون میں اکیوائر ہونیوالی اراضی کی قیمت 40 کروڑ روپے رکھی گئی ۔ اس موقع پر ڈسٹرکٹ کلکٹر آفس اور ایم ڈی اے میں تنازع کھڑا ہوگیا ۔ ڈی سی آفس نے تمام تر دباؤ کے باوجود ویلوایشن ٹیبل ریوائز کرنے سے انکار کر دیا جس پر ایم ڈی کے کو پیچھے ہٹنا پڑا ۔ معلوم ہوا ہے اب ملتان ترقیاتی ادارہ نے فیڈر بس سروس کے افتتاح کے موقع پر ایم ڈی اے چوک سے ڈیرہ اڈا چوک تک سڑک کشادگی کا منصوبہ شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ معلوم ہوا ہے پروجیکٹ شروع ہونے کے بعد شہریوں کو پراپرٹی کی معمولی قیمت دیکر چپ کرا دیا جائیگا ۔ اس حوالے سے ڈائریکٹر انجینئرنگ نذیر نے کہا کہ ایم ڈی اے اس منصوبے کے پی سی ون کو ریوائز کرائے گی ۔ آئندہ ہفتہ تک تمام معاملات فائنل کر لیے جائیں گے اور بہت جلد کنسلٹنٹ اور کنٹریکٹرز کو ورک آرڈر جاری کر دئیے جائیں گے ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -