خیبر ایجنسی ،سینکڑوں طلباء فرسٹ ایئر میں داخلوں سے محروم

خیبر ایجنسی ،سینکڑوں طلباء فرسٹ ایئر میں داخلوں سے محروم

  

خیبر ایجنسی (نمائندہ پاکستان) فرسٹ ائیر میں داخلوں سے محرومیں سینکڑوں قبائلی طلباء کی مستقبل تاریک ہو تانظر آرہا ہے قبائلی کالجوں میں سیٹیں کم جبکہ طلباء میں ہر سال اضافہ ہو تا جا رہا ہے محکمہ تعلیم کی ناقص کارکردگی اور غفلت کی وجہ سے ہر سال نئے طلباء مشکلات سے دوچار ہوتے ہیں اور اپنے علاقوں کے کالجوں میں سینکڑوں مقامی طلباء داخلوں سے محروم ہو تے ہیں گز شتہ روز گورنمنٹ ڈگری کالج لنڈیکوتل کے سینکڑوں طلباء نے احتجاج بھی کیا لیکن تاحال مسئلہ بر قرا ر ہیں لنڈیکوتل گورنمنٹ ڈگری کالج 1974 قائم کیا گیا تھا اس وقت کالج کو انٹر کا درجہ دیا گیا تھا اور 1980میں کالج کو ڈگری کا درجہ دیا گیا لیکن محکمہ تعلیم کی لاپرواہی سے کالج کو سہولیات دینے کے بجائے مکمل نظر انداز کیا گیا پاکستا ن کے صدرممنون حسین نے 2013میں فا ٹا کے تمام کالجز کو اپ گریڈ کرنے کا علان کیا گیا لیکن ابھی تک عملی جا مہ نہیں پہنایا گیا کالج میں ہر سال سینکڑوں طلباء داخلوں سے محروم ہو تے ہیں تقریبا دوسال پہلے گورنر نے کالج میں سیکنڈ شفٹ شروع کیا تھا جس کا خرچہ پولیٹیکل ایجنٹ دے رہا تھا لیکن موجودہ پولیٹکل ایجنٹ نے کالج میں سیکنڈ شفٹ بھی بند کر دیا ہے جسکی وجہ سے سینکڑوں طلباء تعلیم کی زیور سے محروم و رہے ہیں اس سلسلے میں کالج طلباء کے صدور شفاعت شینواری ور رحیم اللہ شینواری نے بتایا کہ پہلے نئے طلباء کو سیکنڈ شفٹ میں داخلے دے کر مسئلہ حل کر دیا جاتا تھا اور سیکنڈ شفٹ کیلئے پرائیویٹ سبجیکٹ ماسٹر لیکچرازکو لیا جاتا تھا جسکی تنخواہیں پولیٹیکل انتطامیہ دے رہے تھے لیکن کالج انتطامیہ نے پرائیویٹ لیکچراز کے بجائے کالج میں تعینات گورنمنٹ لیکچراز سے سیکنڈ شفٹ میں کام لیا جاتا تھا جس پرپولیٹکل انتظامیہ نے سیکنڈ شفٹ بند کر دیا انہوں نے دھمکی دی کہ اگر مسئلہ حل نہیں کیا گیا تو پاک افغان شاہراہ سمیت لنڈیکوتل بازار کو بند کر دینگے جسکی تمام تر ذمہ داری پولیٹیکل انتظامیہ اور فاٹا سیکرٹریٹ پر عائد ہو گی کالج کے پر نسپل نے بتا یا کہ کالج میں ٹوٹل سیٹیں245ہیں اور تقریبا675طلباء نے داخلوں کیلئے فارم جمع کئے ہیں انہوں نے کہا کہ اعلی حکام کو اس مسئلے سے آگاہ کیا ہے اور ڈپٹی ڈائیر یکٹر ایجوکیشن نے بتایا کہ ساٹھ طلباء کو مزید داخلے دئیے لیکن انہوں سو طلباء کو داخلے دئیے لیکن پھر بھی سینکڑوں طلباء رہ جا تے ہیں انہوں نے کہا کہ کالج میں رومز سمیت ٹیچنگ سٹاف کی بھی کمی ہے مستقل حل کیلئے ہنگامی بنیادوں پر کام کرنا چاہئے اس سلسلے میں جب پولیٹیکل ایجنٹ خالد محمودکو واٹس اپ کیا تو انہوں نے کوئی جواب نہیں دیا لیکن اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ نیاز احمد نے بتا یا کہ ڈائیریکٹر ایجوکیشن سے بات ہوئی ہے اور انہوں نے طلباء داخلے دینے کی یقین دہانی کرائی ہیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -