عالم دین شیخ الاسلام والمسلمین حضرت مفتی محمد اختر رضاخان قادری کی یاد میں کانفرنس

عالم دین شیخ الاسلام والمسلمین حضرت مفتی محمد اختر رضاخان قادری کی یاد میں ...

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر) تحریک لبیک یا رسول اللہ ﷺ اور تحریک لبیک اسلام کے زیر اہتمام مرکزِ صراط مستقیم تاج باغ لاہور میں اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان فاضل بریلوی کے پڑپوتے، بھارت کے عظیم عالم دین شیخ الاسلام والمسلمین حضرت مفتی محمد اختر رضاخان قادری قدس سرہ العزیز کی یاد میں عظیم الشان تاج الشریعہ کانفرنس کا انعقاد کیا گیا۔ کانفرنس کی صدارت آستانہ عالیہ شرقپور شریف کے سجادہ نشین حضرت میاں ولید احمد شرقپوری نے کی۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے تحریک لبیک یا رسول اللہ ﷺ وتحریک لبیک اسلام کے سربراہ ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی نے کہاکہ حضرت مفتی محمد اختر رضا خان قادری نابغہ روز گارفقہیہ، عظیم محدث، اور بہت بڑے مصلح تھے ۔آپ کی علمی، روحانی اور اصلاحی تحریک نے کروڑوں لوگوں کو متاثر کیا۔آپ نے ہندو مسلم اتحاد کے نظریے کے مقابلے میں مسلمانوں کے جداگانہ تشخص پر زور دیا۔ آپ نے ہندو سماج اور تہذیب افرنگ کے مقابلے میں تہذیب حجازی اور اسلامی اقدار کو فروغ دیا۔آپ باطل کے مقابلے میں حق کی بہت بڑی چٹان تھے۔ آپ کی ہمہ جہت خدمات کی وجہ سے آپ کو امام احمد رضا خاں ثانی کہا جاتا ہے۔ آپ سچے عقائد و نظریات کے علمبردار تھے۔ آپ کی فقہی بصیرت نے عالم اسلام کو در پیش مسائل میں ان کی رہنمائی کی۔ آپ کی مختلف زبانوں میں 68 سے زائد تصانیف امت مسلمہ کے لیے بہت بڑا سرمایہ ہیں۔ آپ نے دنیا بھر میں تبلیغی دورے کیے جس کے نتیجے میں کئی غیر مسلموں نے آپ کے ہاتھ پر اسلام قبول کیا۔ حضرت میاں ولید احمد شرقپوری نے کہا کہ حضرت مفتی اختر رضا خاں قادری عشق رسول ﷺ کے بہت بڑے سفیر تھے ۔آپ نے ہند کے مسلمانوں کو غیر ت ملی کا سبق دیا ۔حضرت پیر سید محمد ضیاء الاسلام شاہ گیلانی نے کہا کہ حضرت مفتی محمد اختر رضا خاں قادری قرون اولیٰ کے مسلمانوں کے زہد و تقویٰ کی چلتی پھرتی تصویر تھے۔آپ نے کسی کی پرواہ کیے بغیر حق کا پرچم بلند کیا ۔حضرت مفتی محمد عابد جلالی نے کہا حضرت مفتی محمد اختر رضا خاں قادری علم و حکمت کے امام تھے ان کے فیض سے لاکھوں لوگ اطاعت شریعت کے جذبہ سے بہرہ ور ہوئے۔پیر سید محمد خرم ریاض شاہ رضوی نے کہا حضرت مفتی محمد اختر رضا خاں قادری ایک ہشت پہلو ہیرے کی طرح تھے۔جس کے ہر پہلو میں جدا گانہ رنگ و نور موجود تھا ۔حضرت مفتی محمد مختار علی رضوی نے کہا حضور تاج الشریعہ نے امام احمد رضا بریلوی کے تجدیدی کارناموں کو اجاگر کرنے میں آخری سانس تک کردار ادا کیا آپ نے 50 سال تک امت مسلمہ کی رہنمائی کے لیے فتاویٰ صادر کیے۔حضرت صاحبزادہ محمد زکاء اللہ رضوی نے کہا حضور تاج الشریعہ عصر حاضر میں دنیا بھر کے مسلمانوں کی امیدوں کا مرکز تھے۔ صاحبزادہ مرتضی علی ہاشمی نے کہا حضور تاج الشریعہ کی علمی روحانی اور سماجی خدمات صدیوں تک یاد رکھی جائیں گی۔کانفرنس میں حضور تاج الشریعہ کے برادرِ اصغر حضرت الشاہ محمد منان رضا خاں منانی میاں نے بریلی شریف سے ٹیلیفونک خطاب کیا کانفرنس میں صاحبزادہ محمد امین اللہ نبیل سیالوی،صوفی گلزار احمد قادری،محمد نعیم طاہر رضوی،صاحبزادہ سردار احمد رضا فاروقی،ڈاکٹر محمد اسلم جلالی،صاحبزادہ احمد رضا جلالی،صاحبزادہ حامد رضا گوندل، مولانا محمد شکیل قادری،مفتی محمد اشفاق حسنی،مولانا محمد سیف الرحمان رضوی،حافظ محمد زاہد رازی سمیت کثیر تعداد میں علماء و مشائخ اور عوام اہل سنت نے شرکت کی۔کانفرنس کے اختتام پر حضور تاج الشریعہ کو خصوصی طور پر ایصال ثواب کیا گیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1