نواں کوٹ سرکل میں ڈکیتی کی وارداتیں عام ، 607اشتہاری ملز م پولیس کی گرفت سے باہر

نواں کوٹ سرکل میں ڈکیتی کی وارداتیں عام ، 607اشتہاری ملز م پولیس کی گرفت سے ...

لاہور(خبر نگار)نواں کوٹ پولیس سرکل جہاں پر 15 منٹ کے بعد ڈکیتی اور چھینا جھپٹی کی واردات اور لڑائی جھگڑے کی کال، موٹرسائیکل چوری دوسرے نمبر پر جبکہ اس سرکل کے دونوں تھانوں شیراکوٹ اور نواں کوٹ میں پولیس کے ہاتھوں درج مقدمات میں 607اشتہاری ملزمان جہاں شہریوں کے لیے وبال جان بنے ہوئے ہیں۔ وہاں پولیس کے لیے بھی چیلنج بن کر رہ گئے ہیں۔ روزنامہ پاکستان کی جانب سے سرکل کا سروے کیا گیا تو اس موقع پر نواں کوٹ سرکل کے مکینوں کا کہنا تھا کہ موٹرسائیکل سوار نوجوان سودا سلف لینے کے لیے جانے والی خواتین اور مسافر اڈوں کے قریب پرس اور موبائل چھین لیتے ہیں ۔ ان نوجوان اور راہزنوں کی عمریں 14سے16سال کے قریب ہیں۔ ہر 15 منٹ کے بعد کوئی نہ کوئی واقعہ پیش آرہا ہے۔ کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔ ڈولفن فورس اور پیروسکواڈ اور تھانوں کی پولیس مسافر اڈوں کے اردگرد ’’کمائی ‘‘ میں مصروف نظر آتی ہے۔ اسی موقع پر تھانہ نواں کوٹ آئے ہوئے شہری احسان اللہ نے بتایا کہ وہ لیہ کا رہائشی ہے۔ مسافر اڈہ کے قریب ابھی رکشہ سے اترا ہوں، دو موٹر سائیکل سواروں نے موبائل فون چھین لیا ہے۔ اب پولیس کو اطلاع دی ہے تو پولیس کا کہنا ہے کہ فرنٹ ڈیسک پر نیٹ کا مسئلہ ہے اور ایک گھنٹہ انتظار کرنے کے بعد واپس جارہا ہوں۔ شہری اسلم خان نے بتایا کہ اسے نوسربازوں نے لوٹ لیا ہے پولیس نے دو دن بعد درخواست وصول کی ہے۔ شہری اکرام نے بتایا کہ اُس کو گھر کے سامنے دو موٹرسائیکل سواروں نے لوٹ لیا۔ پولیس نے کوئی مدد نہیں کی ہے۔ خاتون عذرا نے بتایا کہ اپنی بیٹی کے ساتھ سودا لینے آئی ہوں تھانے کے سامنے مین روڈ پر موٹرسائیکل سواروں نے پرس چھین لیا ہے۔ عمر رسیدہ شہری اکبر خان نے بتایا کہ اس کے سگے بھانجے اس کے مکان پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔ چار دن سے کوئی بات نہیں سن رہا ہے ۔ تھانہ شیراکوٹ آئے شہری احسن،راجہ امتیاز، ذوالفقار علی، زیشان اکرم، اسلم ناز اور منور شاہ نے پولیس رویے کی شکایت کی۔ جبکہ شہری میاں اکرام نے بتایا کہ وہ شیراکوٹ انٹرچینج پر اترا ہے اور اُسے نوسر بازوں نے لوٹ لیا۔ خاتوں صغراں بی بی نے بھی نوسر بازوں کے ہاتھوں لٹنے کی شکایت کی جبکہ ایک شہری نعیم خان نے بتایا کہ اس کے ساتھ تو لڑائی جھگڑے کا واقعہ پیش آیا ۔ امن و امان کی صورتحال کنٹرول سے باہر ہے۔ جبکہ اس حوالے سے ڈی ایس پی نواں کوٹ جمشید چشتی نے بتایا کہ نواں کوٹ سرکل میں نفری کی شدید کمی ہے اور اس سرکل میں تھانہ نواں کوٹ ، تھانہ شیراکوٹ کی حدود میں مسافر اڈے اور اور موٹروے انٹر چینج کی وجہ سے نوسربازی کے واقعات زیادہ ہیں ۔تاہم ڈکیتی کی واردات کم ہے اس کے باوجود پولیس گشت بڑھانے کا حکم دے دیا گیا ہے۔ جبکہ اشتہاریوں کی گرفتاری کے لیے الگ سے سپیشل ٹیمیں تشکیل دے دی ہیں۔

مزید : علاقائی