لوڈ شیڈنگ سے تاجروں و صنعتکاروں کو نقصان ہورہا ہے : پیاف

لوڈ شیڈنگ سے تاجروں و صنعتکاروں کو نقصان ہورہا ہے : پیاف

لاہور(کامرس رپورٹر) پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرزایسوسی ایشن(پیاف)کے چئیرمین عرفان اقبال شیخ نے وائس چیئرمین خواجہ شاہزیب اکرم کے ہمراہ تاجروں و صنعتکاروں کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے لوڈشیڈنگ کے دورانیہ میں اضافہ پر ردعمل کا اظہا ر کرتے ہوئے کہا ہے کہ 8سے 10گھٹنے کی لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے اور بعض علاقوں میں بغیر شیڈول غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی جا ہی ہے جس سے چھوٹے تاجروں وصنعتکاروں کو بھاری نقصان کا سامنا ہے۔ چیئرمین پیاف عرفان اقبال شیخ نے مطالبہ کیا ہے کہ مارکیٹس اور انڈسٹریز کیلئے لوڈ شیڈنگ کم سے کم کی جائے اورلوڈ شیڈنگ بغیر شیڈول نہ کی جائے اوراس کا باقاعدہ انڈسٹری کو شیڈول مہیا کیا جائے تاکہ وہ اپنی پیداوار کو جاری رکھ سکیں۔ انھوں نے متعلقہ حکام سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ توانائی بحران پر قابو پانے کے لئے ہنگامی اقدامات کریں معاشی ترقی کے لئے بلا تعطل بجلی کی فراہمی از حد ضروری ہے ۔ بجلی گیس کے نہ ہونے سے پیداوا ر شدید متاثر ہو رہی ہے اور بیروزگاری پربھی بڑھ رہی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ لوڈشیڈنگ کا منفی اثر برآمدا ت پر پڑ رہا ہے انہوں کہا کہ حکومت ٹیکسٹائل کے علاوہ دوسری انڈسٹری کو بھی ترجیحی بنیادوں پر بجلی اور گیس مہیا کرے ۔وائس چیئرمین پیاف خواجہ شاہزیب اکرم نے کہا کہ توانائی کی پیداوار کے منصوبے جلد مکمل کئے جائیں تاکہ بجلی کی قلت دور ہو سکے اور صنعت و تجارت سے وابستہ افراد کو بجلی کی مسلسل سپلائی دی جائے اور اس سلسلے میں حکومت کو ہنگامی اقدامات کرنے چاہییں ۔بجلی اور گیس کی غیر موجودگی میں مشینوں کو لمبے عرصے تک چلانا بہت مشکل ہے ۔پیاف عہدیداران نے نگران حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ صنعتوں کو ترجیحی بنیادوں پر بجلی او ر گیس مہیا کی جائے تا کہ انڈسٹری کا پہیہ بلا تعطل چلتا رہے۔

مزید : کامرس