بہالپور : قدیمی مندر ٹوٹ پھوٹ کا شکار ، نایاب اشیاء لاہور عجائب گھر منتقل

بہالپور : قدیمی مندر ٹوٹ پھوٹ کا شکار ، نایاب اشیاء لاہور عجائب گھر منتقل

بہاول پور(بیورورپورٹ) 300 برس قدیمی کالادھاری مندر زبوں حالی کاشکارہے‘ مندرکی عمارت شکست وریخت کاشکارہوگئی ہے‘بہاول پورمیوزیم کے ہوتے ہوئے مندرکی نایاب اشیاء لاہورکے عجائب گھرمنتقل کردی گئیں تفصیل کیمطابق بہاول پورشہرکے طول وعرض میں متعدد قدیم (بقیہ نمبر41صفحہ12پر )

عمارات عبادت گاہیں محلات اورکھنڈرات آج بھی عہد رفتہ کی یاددلاتے ہیں غیرمسلموں کی عبادت گاہیں اس علاقہ کی بین المذاہب ہم آہنگی کی روایات کی امین تھی بہاول پورشہرکے قدیم محلہ پھٹوں والی گلی میں تین سوبرس قدیم شری نانی دیوکلادھاری جی مہاراج مندر ہے جو اب کالادھاری مندرکے نام سے منسوب ہے یہ عمارت اپنے فن تعمیر‘ نقش ونگارخصوصا لکڑی کے ڈھانچے اوراس پرکنندہ مورتیوں کے باعث ایک خاص قسم کی جداگانہ حیثیت کی حامل ہے مندرکامرکزی دروازہ لکڑی کاتھا جس پرنقش ونگار اوروشنوقبیلے کوماننے والوں کے دیوتاؤں کی تصاویرکنندہ تھیں یہ مرکزی دروازہ اب بہاول پورکے عجائب گھرمیں محفوظ ہے لیکن اس مندرکی حالت انتہائی شکستہ ہے اور عمارت شدیدبارشوں ‘موسمی حالات اور محکمہ اوقاف و آثارقدیمہ کی عدم توجہی کے باعث مندرکی عمارت شکست وریخت کاشکار ہوچکی ہے مندر میں کارپوریشن بہاول پورکے زیرانتظام ایک پرائمری سکول قائم ہے اورمندرکاکنٹرول محکمہ متروک املاک کے پاس ہے جس نے مندرکی بالائی منزل کرایہ پردے رکھی ہے علاقہ مکینوں محمداسلم ‘محمدنوار‘ نسیم اختر‘سہیل احمد ودیگرنے بتایا کہ تاریخی اہمیت کے حامل اس مندر کومحفوظ کرنے کیلئے وسیع فنڈز درکارہیں جن کی عدم دستیابی کے باعث مندرکی عمارت زمین بوس ہورہی ہے بہاول پورمیں عجائب گھرہونے کے باوجود مندرکی نایاب اشیاء کولاہورکے عجائب گھرمیں منتقل کردیاگیا مندرکی پرشکوہ عمارت تاحال فن تعمیر کی وجہ سے انتہائی خوبصورت دکھائی دیتی ہے اوراگر محکمہ آثارقدیمہ اور اوقاف اس پرمناسب توجہ دے اوراسکی تزئین وآرائش ومرمت کیلئے فنڈز جاری کرے تو تاریخ کی اس یاداشت کومحفوظ کیاجاسکتاہے ۔

قدیمی مندر

مزید : ملتان صفحہ آخر