جموں وکشمیر متنازع ریاست،بھارت جارحیت سے بازرہے،مظاہرین

جموں وکشمیر متنازع ریاست،بھارت جارحیت سے بازرہے،مظاہرین

مظفرآباد(وقائع نگار خصوصی) جموں کشمیر متنازعہ ریاست ہے بھارت کسی بھی قانونی جارحیت سے باز رہے، 35A آرٹیکل ریاست کی جغرافیائی ہیئت، اسلامی تشخص، خوبصورت سماج شاندار کشمیری کلچر وثقافت کا ضامن ہے بھارت سے آزادی کیلئے جنگ فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوچکی ہے اقوام متحدہ جموں کشمیر میں فوری مداخلت کرکے بھارت کو فوجی اور قانونی جارحیت سے روکے، متحدہ حریت قیادت اور کشمیری عوام کے شانہ بشانہ بھارت کا مقابلہ کریں گے، بھارتی سپریم کورٹ میں جاری آرٹیکل 35A کے خلاف کیس کو لے کرآزاد جموں کشمیر کے دارلحکومت مظفرآباد میں پاسبان حریت جموں کشمیر اورانٹرنیشنل فورم فارجسٹس اینڈ ہیومن رائٹس جموں کشمیرکے زیراہتمام سنٹرل پریس کلب کے سامنے سینکڑوں لوگوں نے بھارت مخالف دھرنا دیااور شدید احتجاج کرتے ہوئے ریلی بھی نکالی۔ دھرنے میں شامل لوگوں نے ہاتھوں میں کتبے اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر جموں کشمیرمیں نافذ آرٹیکل 35A کے حق میں نعرے درج تھے جب کے 35A کیخلاف دہلی سپریم کورٹ میں ہورہی سماعت پرمذمتی جملے درج تھے ۔احتجاجی شرکاء نے بھارت سے جموں کشمیرکی آزادی کیلئے اور ہندوستانی جبر کے خلاف شدید نعرہ بازی کی، ریلی میں سیاسی، مذہبی جماعتوں کے قائدین، وکلاء، تاجران، طلبہ اوردیگرنمائندوں نے شرکت کی، بھارت مخالف احتجاجی دھرنا سے پیپلز پارٹی آزادکشمیر کے مرکزی صدرچوہدری لطیف اکبر،پاسبان حریت جموں کشمیر کے چیئرمین عزیر احمدغزالی، انٹرنیشنل فورم فارجسٹس اینڈ ہیومن رائٹس کے وائس چیئرمین مشتاق الاسلام، صدر سنٹرل بار مظفرآباد مقبول الرحمن عباسی ایڈوکیٹ، حزب المجاہدین کے کمانڈر شمشیرخان ،جماعت الدعوۃ کے امیرمولانا عبدالعزیزعلوی، شوکت جاوید میر، قاضی شاہد حمید ایڈووکیٹ، محمودالحسن اشرف، راحت فاروق ایڈووکیٹ، خواجہ سیف الدین، ڈاکٹر محمد منظور، سہیل اقبال اعوان،قاری بلال فاروقی، حمزہ شاہین، کمانڈر محمد اعظم غازی، عثمان علی ہاشم اوردیگرمقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیراقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق متنازعہ ریاست ہے بھارت متنازعہ خطہ میں کسی بھی قسم کی فوجی اور قانونی جارحیت سے باز رہے حکومت ہندقانونی دہشت گردی کے زریعے35A کو ختم کرکے دراصل جموں کشمیرکی جغرافیائی ہیئت کو تبدیل کرنے، ریاست میں مسلم اکثریت کو اقلیت میں بدل کر کشمیرکی اسلامی روایات، ثقافت وکلچر اور ریاستی عوام کے بیچ صدیوں سے قائم بھائی چارے کے خوبصورت معاشرے کو تباہی سے دوچار کرنا چاہتا ہے مقررین نے کہا کے بھارت 35A کے خلاف سازش کرکے پوری ریاستی عوام کو یہ پیغام دے چکا ہے کے بھارت نے کبھی بھی ریاستی عوام کے ساتھ کیئے گئے وعدوں کو پورا نہیں کیا، مقررین نے خطاب میں مقبوضہ جموں کشمیر کی صورت حال کو تباہ کن قراردیتے ہوئے اقوام متحدہ اور عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ آگے بڑھ کر بھارت کو متنازعہ ریاست پر قانونی اور فوجی جارحیت سے روکیں ۔مقررین نے کہا کے مذہب کی تفریق کے باوجود جموں کشمیر کے عوام، آزادی پسند قیادت بھارت سے اپنی آزادی اورآئندہ آنے والی نسلوں کی بقاء کی جنگ لڑرہے ہیں دنیا کشمیری عوام کی جدوجہد آزادی کو تسلیم کرچکی ہے مقررین نے کہاکہ اقوام متحدہ نے بھارتی مظالم کا اعتراف کرکے بھارت کی نام نہاد جمہوریت کو بے نقاب کردیا ہے احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کے کشمیری نوجوان نہتے ہاتھوں بھارتی قابض افواج کا مقابلہ کرکے شہادتیں پیش کرکے عظیم داستان رقم کررہے ہیں بعد ازاں احتجاجی شرکاء نے سنٹرل پریس کلب سے برہان وانی شہید چوک تک مارچ کیااور شہدآئے کشمیر کیلئے فاتحہ خوانی کی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر