تین طلاقوں کے بعد سسر کے ساتھ حلالہ، عدت میں سابق شوہر نے ریپ کر دیا،متاثرہ خاتون انصاف کے حصول کے لیے تھانے پہنچ گئی

تین طلاقوں کے بعد سسر کے ساتھ حلالہ، عدت میں سابق شوہر نے ریپ کر دیا،متاثرہ ...
تین طلاقوں کے بعد سسر کے ساتھ حلالہ، عدت میں سابق شوہر نے ریپ کر دیا،متاثرہ خاتون انصاف کے حصول کے لیے تھانے پہنچ گئی

  

نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سنبھل کی رہنے والی خاتون کا الزام ہے کہ اس کے شوہر نے اسے تین طلاقیں دینے کے بعد اپنے والد کے ساتھ حلالہ کرنے پر مجبور کیا اور پھر عدت کے دوران شوہر نے ریپ کیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق سنبھل ضلع کی رہنے والی رضیہ خاتون نے تھانے میں دی جانے والی درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ اسے شادی کے بعد محض 2 مہینے 24 دنوں تک ہی سسرال میں رکھا گیا اور اس کے بعد اسے مار پیٹ کر کے گھر سے نکال دیا گیا۔ بعد میں اس کے شوہر نے تین طلاقیں دے دیں۔ جب میں نے سسرال والوں پر جہیز استحصال کا مقدمہ درج کرایا تو شوہر نے اسے اپنے ساتھ رکھنے کا وعدہ کرکے معاملے میں سمجھوتہ کروا لیا۔ پھر اپنے ہی والد سے اس کے شوہر نے حلالہ کروایا۔ اتنا ہی نہیں عدت کے دن گزر بھی نہیں پائے تھے کہ شوہر نے اس کے ساتھ زبردستی ریپ کیا۔شوہر کی اس گھناونی حرکت کے بعد جب حاملہ ہو گئی تو اس پر بھی اسقاط حمل کرانے کا دباو ڈالا گیا۔ جب وہ نہیں مانی تو 15 دنوں تک اسے بھوکا پیاسا گھر میں قید رکھا گیا لیکن اس درمیان رضیہ نے کسی طرح پولیس کو اطلاع دے دی۔ جس کے بعد پولیس نے اسے شوہر کی قید سے آزاد کروایا۔

مزید : بین الاقوامی