نجی تعلیمی اداروں کا فیسوں میں 20فیصد کٹوتی سے انکار، والدین پریشان 

نجی تعلیمی اداروں کا فیسوں میں 20فیصد کٹوتی سے انکار، والدین پریشان 

  

 لاہور (ڈویلپمنٹ سیل) حکومت پنجاب نجی تعلیمی اداروں سے جولائی،اگست کی فیسوں میں 20فیصد رعایت کروانے کے فیصلے پر عمل درآمد کروانے میں ناکام، سکول کالجزنے وزیر تعلیم کے تعلیمی ادارے بندرہنے تک 20فیصد رعایت کے اعلان کو پس ِ پشت ڈال دیااوربغیر رعایت کے جولائی، اگست کی فیسوں کے چالان جاری کر کے ادائیگی کیلئے 10اگست کی ڈیڈ لائن دے دی،  5ماہ سے لاک ڈاؤن کا شکار والدین  نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ والدین کا موقف ہے کہ لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد پنجاب حکومت نے جون تک فیسوں میں 20فیصد رعایت کا اعلان کیا تھا اس کے بعد وزیر تعلیم نے دو ٹوک انداز میں والدین کو یقین دہانی کرائی تھی کہ جب تک تعلیمی ادارے بند ہیں 20فیصد رعایت برقرار رہے گی۔ پنجاب حکومت کی اس بارے میں واضع پالیسی نہ ہونے کی وجہ سے مئی، جون کی فیسیں جمع نہ کروانے والوں پر بھاری جرمانے بھی عائد کئے جار ہے ہیں۔ جولائی، اگست کے چالان بغیر رعایت کے جاری ہوئے ہیں، بورڈنگ سکولوں نے سکول اور ہوسٹل بند ہونے کے باوجود بورڈنگ ، بجلی،لانڈری اور فوڈ چارجز ڈال کر چالان جاری کئے ہیں،والدین کا کہنا ہے کہ ایک طرف کاروبار نہیں دوسری طرف فیسیں نہ جمع کروانے کی صورت میں بچوں کو سکولوں سے نکالنے کے نوٹس جاری کئے جا رہے ہیں۔ 

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -