کلبھوشن یادیو کیس، پاکستان کی بھارت کو وکیل مقرر کرنے کیلئے دوبارہ پیشکش، مراسلہ ارسال جواب کا انتظار 

کلبھوشن یادیو کیس، پاکستان کی بھارت کو وکیل مقرر کرنے کیلئے دوبارہ پیشکش، ...

  

 اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان نے بھارت کو ایک بار پھر کلبھوشن یادیو کیلئے وکیل کرنے کی پیشکش کر دی۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کے حکم پر کیے گئے سفارتی را بط پر بھارت کی جانب سے تاحال جواب نہیں دیا گیا۔ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ترجمان دفتر خا ر جہ عائشہ فاروقی نے کہا اسلام آباد ہائیکورٹ کے حکم کی روشنی میں کلبھوشن یادیو اور اسے بھیجنے والے ملک بھارت کو وکیل مقرر کرنے کی دوبارہ پیشکش کی گئی ہے، بھارت کو مراسلہ بھجوا دیا گیا، بھارت کی جانب سے جواب کا انتظا ر ہے۔ پریس بریفنگ میں ترجما ن دفتر خارجہ کا کہنا تھاکشمیر سے متعلق موقف نہیں بدلا، سیاسی نقشہ وقت کی ضرورت تھی۔ او آئی سی کشمیر پر اپنا قائدانہ کردار ادا کرے۔ پاکستان او آئی سی کا بانی ہے، ہمارے او آ ئی سی ممالک سے قریبی تعلقات ہیں۔اوآئی سی نے تسلسل سے جموں و کشمیر کے مسئلے کی حمایت کی ہے،پانچ اگست 2019ء سے پاکستان نے کشمیر پر او آئی سی کیساتھ تین اجلاس کئے،او آئی سی نے کشمیر پر مضبوط بیانات دیئے،تاہم پاکستان کے عوام کو او آئی سی سے مزید تو قعا ت ہیں، ہم چاہتے ہیں او آئی سی کشمیر پر اپنا قائدانہ کردار ادا کرے، سعودی عر ب سے بھی ہمارے قریبی اور برادرانہ تعلقات ہیں۔ ترجمان دفترخارجہ کامزید کہنا تھا پاکستان کے سیاسی نقشے کے اجراء پر اراکین پارلیمان کو اعتماد میں لیا گیا ہے۔اس موقع پر ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے حریت رہنما سید علی گیلانی کو ان کی استقامت اور بہادری کے باعث نشان پاکستان دینے کا اعلان کر تے ہوئے کہاپاکستان کے سیاسی نقشہ میں جموں و کشمیر کو پاکستان کا حصہ دکھانا تضاد ہے نہ ہی گزشتہ برس جاری ہونیوالے بھارتی نقشے کی نفی،اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں کشمیر پر بات ہونے کا مطلب ہے یہ بھارت کا اندرونی معاملہ نہیں،پاکستان کشمیر کا معاملہ اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے ذریعے حل چاہتا ہے،پاکستان اور بھارت کے درمیان کسی قسم کی بیک ڈور ڈپلومیسی جاری نہیں،جب تک کشمیر میں مظالم جاری ہیں بیک ڈور ڈپلومیسی ممکن نہیں،پاکستان کی افغانستان میں مفاہمتی عمل کو آگے بڑھانے کیلئے سہولت کاری جاری ہے۔ہم مسئلہ کشمیر پر ایک سال میں تین مرتبہ اجلاس طلب کئے جانے پر سلامتی کونسل کے تمام اراکین بالخصوص چین کے شکرگزار ہیں۔تر جمان نے کہا سانحہ لبنان پر پاکستان اپنے برادر اسلامی ملک کیساتھ ہے اور اظہار ہمدردی کرتا ہے،دھماکوں میں ایک پاکستانی خاندان بری طرح متاثر ہوا،لبنان میں پاکستانی خاندان کا بچہ بھی شہید ہو گیا،اس خاندان کے والد اور ایک ہمشیرہ ہسپتال میں تشویش ناک حالت میں ہیں۔ انہوں نے کہاافغانستان کی جانب سے پہلے بھی فائرنگ پر پاکستان کو جوابی کارروائی کرنا پڑی تھی۔پاکستان اور چین نے سزایافتہ مجرموں کی منتقلی کے حوا لے سے معاہدہ کیا تھا،اس پر عملدرآمد کیلئے کوششیں جاری ہیں۔ دوحہ میں ملاقاتوں کا مقصد افغانستان میں دائمی امن کے قیام میں فعال کردار ادا کرنا ہے۔ بعدازاں عائشہ فاروقی نے نئے ترجمان دفتر خارجہ زاہد فاروق چوہدری کو متعارف کروا یا۔

پاکستان پیشکش

مزید :

صفحہ اول -