لاک ڈاؤن کے دوران تاجر لاکھوں روپے کے مقروض ہو گئے: انجمن تاجران 

  لاک ڈاؤن کے دوران تاجر لاکھوں روپے کے مقروض ہو گئے: انجمن تاجران 

  

 لاہور/گوجرانوالہ/سیالکوٹ/فیصل آباد(این این آئی)آ ل پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی صدراشرف بھٹی نے کہا ہے کہ حکومت ہفتے میں پانچ روز کاروباراور اوقات کار کی پابندی کا نوٹیفکیشن فی الفور واپس لے کر سات روز کاروبار اور اوقات کی پابندی کے بغیر کاروبارکرنے کی اجازت دے، تاجر تنظیموں کاسیاست سے کوئی تعلق نہیں لیکن موجودہ حکومت تاریخ کی پہلی حکومت ہے جو تاجروں سے مشاورت کو اپنی توہین سمجھتی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے تاجررہنماؤں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جنہوں نے اپنے مسائل کے حوالے سے تفصیلی آگاہ کیا۔اشرف بھٹی نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے دوران تاجر لاکھوں روپے کے مقروض ہو چکے ہیں اور ان کا کوئی پرسان حال نہیں۔ حکومت سے مطالبہ ہے کہ تاجرو ں کی مالی معاونت کرے اور انہیں بلا سود قرضے دئیے جائیں۔ حکومت نے تاجروں کی تجاویز کو نظر انداز کرنا اپنا وطیرہ بنا لیا ہے اور اب ہمارے صبر کا پیمانہ لبریز ہو رہا ہے۔ ایک بار پھر مطالبہ کرتے ہیں کہ تاجر تنظیموں سے موثر رابطوں کے لئے فوکل پرسنز کی تعیناتی کی جائے اور وزیر اعظم عمران خان خود ہمارے مسائل سے آگاہی حاصل کریں۔ اشرف بھٹی نے تاجروں کے وفد کو یقین دہانی کرائی کہ ان کے مسائل کے حل کیلئے ہر فورم پر آوازبلند کی جائے گی۔

مزید :

کامرس -