ووہان میں کورونا وائرس سے صحت مند ہونے والے 90 فیصد افراد نئی مشکل میں پھنس گئے، تازہ رپورٹ میں انتہائی پریشان کن دعویٰ سامنے آگیا

ووہان میں کورونا وائرس سے صحت مند ہونے والے 90 فیصد افراد نئی مشکل میں پھنس ...
ووہان میں کورونا وائرس سے صحت مند ہونے والے 90 فیصد افراد نئی مشکل میں پھنس گئے، تازہ رپورٹ میں انتہائی پریشان کن دعویٰ سامنے آگیا

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس سے صحت یاب ہونے والے مریضوں کے متعلق نئی تحقیق میں چینی سائنسدانوں نے ایک انتہائی پریشان کن دعویٰ کر دیا ہے۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق چین کے شہر ووہان کے ژونگ نان ہسپتال کے ماہرین نے کورونا وائرس کے صحت یاب ہونے والے ہزاروں مریضوں پر تجربات کے بعد بتایا ہے کہ ان میں سے 90فیصد لوگوں کے پھیپھڑوں کو نقصان پہنچ چکا ہے اور یہ نقصان ممکنہ طور پر تمام عمر ٹھیک نہیں ہو سکے گا۔

سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ ”ان لوگوں کے پھیپھڑوں کے وینٹی لیشن اور گیس ایکسچینج فنکشز کورونا وائرس سے صحت یابی کے بعد بھی ٹھیک سے کام نہیں کر رہے ہیں، جس طرح ایک صحت مند شخص میں کرتے ہیں۔ تحقیق میں شامل کئی مریض تو ایسے تھے جنہیں کورونا وائرس سے صحت یاب ہوئے 3ماہ سے زائد وقت گزر چکا تھا تاہم انہیں اب بھی آکسیجن مشینوں کی ضرورت پڑ رہی تھی۔ تحقیق میں یہ بھی ثابت ہوا کہ کورونا وائر س سے صحت مند ہونے والے لوگ 6منٹ میں صرف 400میٹر چل سکتے ہیں حالانکہ صحت مند افراد اوسطاً اتنے وقت میں 500میٹر چل سکتے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -