9حلقوں کے ضمنی الیکشن پر  50 سے 90 کروڑ روپے اخراجات ہوسکتے ہیں 

   9حلقوں کے ضمنی الیکشن پر  50 سے 90 کروڑ روپے اخراجات ہوسکتے ہیں 

  

 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین و سابق وزیراعظم عمران خان نے قومی اسمبلی کے 9 حلقوں سے خود ضمنی الیکشن لڑنے کا اعلان کیا ہے۔قومی اسمبلی کے 9 حلقوں میں 25 ستمبر کو ضمنی انتخابات ہوں گے اور پی ٹی آئی چیئرمین نے ان حلقوں سے خود الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا۔ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی کے ایک حلقے میں الیکشن اخراجات کا کم از کم تخمینہ 5 سے 10 کروڑ روپے ہے، حساس یا دور دراز علاقوں کے حلقے میں الیکشن اخرجات 10 کروڑ روپے تک پہنچ جاتے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ 9 حلقوں میں ضمنی الیکشن پر اخراجات 50 سے 90 کروڑ روپے ہوسکتے ہیں، بیلٹ پیپرز، فارمز، بیلٹ باکس سمیت بیلٹ مواد کی پرنٹنگ اور خریداری پر اخراجات آئیں گے، الیکشن کیلئے پولیس اور رینجرز کی سکیورٹی پر اخراجات ہوں گے۔ذرائع کے مطابق حلقوں میں فوج کی تعیناتی سے متعلق اضافی اخراجات ہوں گے، الیکشن عملے کی تربیت، ان کے اعزازیہ کے اخراجات ہوں گے، آئی ٹی سامان، ٹرانسپورٹ، فیول کے اخراجات بھی ادا ہوں گے۔عمران خان کے تمام 9 حلقوں سے کامیابی کی صورت میں انہیں 8 حلقوں کو چھوڑ کر ایک کا انتخاب کرنا ہو گا اور وہ میانوالی کی نشست سے پہلے ہی رکن قومی اسمبلی ہیں۔عمران خان کے الیکشن جیتنے کی صورت میں قومی اسمبلی کے 9 حلقوں میں دوبارہ ضمنی الیکشن ہو گا اور اس صورت میں ایک مرتبہ پھر الیکشن پر 50 سے 90 کروڑ روپے تک اخراجات آئیں گے۔

ضمنی الیکشن

مزید :

کامرس -صفحہ اول -