غیر صحافتی تنظیم کے قیام کے خلاف مہمند پریس کلب کا احتجاج 

  غیر صحافتی تنظیم کے قیام کے خلاف مہمند پریس کلب کا احتجاج 

  

ضلع مہمند(نمائندہ پاکستان) غیر صحافتی تنظیم کے قیام کے خلاف مہمند پریس کلب کا احتجاج آج تیسرے روز بھی جاری،پریس کلب میں تمام تر صحافتی امور بند،ہر قسم کی سرکاری تقریبات کا بائیکاٹ۔ہنگامی پریس کانفرنس اور قومی معاملات رہورٹ کی جائینگی۔ مطالبات کے حل ہونے تک احتجاج،جاری رہے گا۔ ضلع مہمند میں غیر ضحافتی تنظیم پولیس کی  پشت پناہی پر متوازی صحافتی تنظیم کے دفتر کا قیام کے خلاف مہمند پریس کلب کے صحافیوں کا احتجاج آج تیسرے روز بھی جاری ہے، پریس کلب میں ہر قسم کی صحافتی امور ٹھپ ہوکر رہ گئے ہیں، پریس کلب کے صدر مشترم خان نے میٹنگ کے موقع پر ں ات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تمام صحافی ہر قسم کی سرکاری تقریبات کا مکمل بائیکاٹ کریں اور صرف ہنگامی پریس کانفرنس یا قومی مسائل ہی رہورٹ کیے جائینگے اسکے علاوہ کسی قسم کی رپورٹ کی اجازت نہیں ہوگی۔۔انہوں نے کہا کہ مہمند پریس کلب پچھلے تیس سال سے مہمند قوم کی خدمت اور انکے مسائل اجاگر کرنے کیلئے کوشاں ہیں لیکن اب چند مفاد پرست لوگ صحافت کی آڑ میں گھناونا کھیل کھیلنے کی کوشش اور سازش کررہے ہیں جسکی ہرگز اجازت نہیں دی جاسکتی۔انہوں نے کہا کہ ہم صحافت کو عبادت اور اپنی قومی ذمہ داری سمجھتے ہیں اور یہاں کے رسم ورواج اور قبائیل روایات کے اندر صحافتی سرگرمیاں سرانجام دیتے ہیں جبکہ اب غیر مقامی اور غیر تجربہ کار لوگ صحافت کو بدنام کرنے کے درپے ہیں۔انہوں نے ایک بار انتظامیہ اور پولیس سے پرزور مطالبہ کرتے ہوئے مذکورہ نام نہاد تنظیم کا دفتر بند کرکے انکے خلاف فوری کاروائی کریں بصورت دیگر تمام تر حالات کی ذمہ داری انتظامیہ اور پولیس کی ہوگی۔

مزید :

کامرس -پشاورصفحہ آخر -