پنجاب کے بلدیاتی ادارے گرانٹس سے محروم،ترقیاتی کام متاثر

پنجاب کے بلدیاتی ادارے گرانٹس سے محروم،ترقیاتی کام متاثر

  

لاہور(عامر بٹ سے) محکمہ خزانہ پنجاب نے بلدیاتی اداروں کو اربوں روپے کی ترقیاتی گرانٹ سے محروم کر دیا۔محکمہ بلدیات بھی چار سال سے زائد عرصہ گذرنے کے باوجود صوبہ کے 229 بلدیاتی اداروں کا پی ایف سی ڈویلپمنٹ شیئر بحال کروانے میں ناکام ہو گیا۔پنجاب کے 90 فیصد سے زائد بلدیاتی اداروں کے پاس ترقیاتی کاموں کیلئے مناسب بجٹ موجود نہیں۔بلدیاتی ادارے اے ڈی پی بنانے سے بھی قاصر ہے۔صرف لاہور میٹرو پولیٹن کارپوریشن کو 2018ء کے بعد پی ایف سی ڈویلپمنٹ شیئر جاری نہ ہونے سے دو ارب 9 کروڑ 25 لاکھ روپے کا نقصان ہوا ہے۔محکمہ خزانہ کی جانب سے بلدیاتی اداروں کو صرف پی ایف سی کرنٹ شیئر جاری کیا جا رہا ہے۔جو تنخواہوں اور نان ڈویلپمنٹ بجٹ پر خرچ ہو رہا ہے۔رواں مالی سال کرنٹ پی ایف سی شیئر میں ساڑھے سات فیصد اضافہ کیا گیا ہے تاہم اس سال بھی ڈویلپمنٹ شیئر جاری ہونے کے حوالے سے کوئی عندیہ نہیں دیا گیا ہے۔صوبائی مالیاتی کمیشن ایوارڈ کے تحت ڈویلپمنٹ شیئر جاری نہ ہونے سے جہاں لاہور میٹرو پولیٹن کارپوریشن کا ترقیاتی بجٹ متاثر ہوا ہے وہاں 11 میونسپل کارپوریشنز،35 ضلع کونسلوں اور 182 میونسپل کمیٹیوں کی مالی حالت بھی خراب ہوئی ہے۔متعدد بلدیاتی اداروں کی جانب سے مذکورہ ڈویلپمنٹ شیئر کے اجرا کیلئے تحریری طور پر درخواست کی گئی تاہم محکمہ بلدیات پنجاب کا بھی اس حوالے سے کردار مثبت نہیں رہا ہے۔

بلدیاتی ادارے 

مزید :

صفحہ آخر -