ملتان،44ویں سالانہ حسینیہ کانفرنس کل،تیاریاں مکمل 

ملتان،44ویں سالانہ حسینیہ کانفرنس کل،تیاریاں مکمل 

  

ملتان(سٹی رپورٹر)44ویں سالانہ حسینیہ کانفرنس کی آرگنائزنگ کمیٹی کے رہنماؤں زاہد گردیزی، مخدوم سید علی مہدی شمسی، خاور شفقت بھٹہ، سردار اسحاق بلوچ، سبطین رضا لودھی، پروفیسر طارق شاہ قادری نے مقامی ہوٹل میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا (بقیہ نمبر33صفحہ6پر)

ہے کہ44ویں سالانہ حسینیہ کانفرنس کل8اگست 9محرم الحرام بروز سومواربمقام رضاہال ملتان میں بوقت 8بجے شروع ہو گی جس میں دربار عالیہ حضرت شاہ رکن عالم  ملتانی کے سجادہ نشین وسابق وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی،رکن صوبائی اسمبلی مخدوم زادہ زین حسین قریشی، سابق صوبائی وزیر معین الدین قریشی، سابق صوبائی وزیر ڈاکٹر اختر ملک، محمد ندیم قریشی، الحاج جاوید اختر انصاری، ڈپٹی کمشنر ملتان طاہر وٹو،خالد جاوید وڑائچ کے علاوہ مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے ممتاز علما کرام،سجادہ نشین، خطبا علامہ ڈاکٹر قبلہ ایاز، علامہ طاہر محمود اشرفی، ڈاکٹر غضنفر مہدی، علی عباس کربلائی، علامہ آغا جعفر رضا علوی، مفتی غلام مصطفی رضوی، علامہ عبد الحق مجاہد، علامہ سید کاشف ظہور نقوی، علامہ عنائیت اللہ رحمانی، علامہ محمد سلیم حیدر، ممبر امن کمیٹی پنجاب خاور شفقت بھٹہ، سیدہ زہرہ سجاد زیدی،پیر عظمت سلطان، علی احسن کاظمی، علامہ رکن الدین قادری، ڈاکٹر صدیق خان قادری،، مظہر جاوید، نیاز گل خان ناصر، پروفیسر عبد الماجد وٹو، سیمسن سلامت، علامہ عبد الحنان حیدری، شفقت خان لنگاہ سمیت دیگر مقررین خطاب کریں گے رہنماں نے مزید کہا کہ سالانہ حسینیہ کانفرنس کا مقصد اتحاد بین المسلمین، اتحاد،اخوت، بھائی چارہ ہے اور 44ویں سالانہ حسینیہ کانفرنس کا پلیٹ فارم بھی یہی ہے یہی وجہ ہے کہ اتحاد،امن اور یکجہتی کی فضا آج بھی قائم ہے اور میثاق ملتان سے منسوب ہے اپنا عقیدہ چھوڑو نہ اور کسی کے عقیدہ کو چھیڑو نہ اور کسی قسم کی دل آزاری نہ ہو،سالانہ حسینہ کانفرنس کا مقصد یہ بھی ہے کہ سوشل میڈیا پر اصحاب  رسول ؓ، صحابہ  کرام،اہلبیت  اور مذہبی بحث اور دل آزاری کے موضوع پر سخت مانیٹرنگ کی جائے، مذہبی انتہا پسندی کے رحجانات کی بیخ کنی کی ضرورت ہے،بیرونی ممالک سے ایکسپورٹ شدہ ہر قسم کے لٹریچر کی داخلی سطح پر روک تھام کی جائے،مذہبی رواداری کے فروغ کے لئے میثاق مدینہ کے نکات پر عملدر آمد کیاجائے، نوجوان نسل میں اکابرین اسلاف کی تعلیمات اور اسوہ رسول ؓ اور اسوہ شبیری پر گامزن کرنے کے اقدامات کئے جائیں، محرم الحرام کی سیکیورٹی کے نام پر ضلعی انتظامیہ ملتان، مقامی امام بارگاہوں کے منتظمین کی مشاورت سے سیکیورٹی کے اقدامات کرے، بلاوجہ سڑکوں، گلیوں پر کناتیں لگا کر سیکیورٹی کے مقاصد بروئے کار نہیں لائے جاسکتے، یکم محرم الحرام سے 12ربیع الاول تک ہر قسم کے تفریحی و ثقافتی پروگراموں کی نشریات بند کی جائیں، 9,10محرم الحرام کو بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ مکمل طور پر بند کیاجائے،رہنماں نے مزید کہا کہ عزاداری کے حوالے سے ملتان بہت بڑا تہذیبی وثقافتی مرکز ہے اور یہاں کی عزاداری کی تاریخ بہت قدیم ہے یہی وجہ ہے کہ محرم الحرام میں کی جانے والی عزاداری کے لائسنسداران بھی اہلسنت مسلک سے تعلق رکھتے ہیں اس سے حسین  سب کا کا سلوگن حقیقی شکل میں سامنے آتا ہے حسینیہ کانفرنس کا مقصد یہ بھی ہے کہ تبدیلی کے ساتھ ساتھ نئے پاکستان میں امن کمیٹیوں کے ناموں کو تبدیل کرکے اور ان کی جگہ محرم الحرام کمیٹی، اخوت کمیٹی، ملکی یکجہتی کمیٹی جیسے نام رکھے جائیں اور انگریز سامراج کے دیئے ہوئے ان ناموں سے اجتناب کیاجائے، حکومت پاکستان، وزارت خارجہ اور کرکٹ بورڈاس امر کو یقینی بنائے کہ محرم الحرام کے ایام میں تفریحی اور دیگر سرگرمیوں سے اجتناب کیاجائے اور بین الاقوامی سطح پر اس امر کو یقینی بنایا جائے کہ پاکستان ایک اسلامی جمہوری ملک ہے اور اسلامی کیلنڈر کے مطابق پروٹو کول انٹرنیشنل شخصیات کا ترتیب دیا جائے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -