سعودی عرب:کمیونٹی سکولوں کو ہر علاقے میں شاخ کھولنے کی اجازت مل گئی

سعودی عرب:کمیونٹی سکولوں کو ہر علاقے میں شاخ کھولنے کی اجازت مل گئی

جدہ (بیورو رپورٹ) سعودی وزارت تعلیم نے کمیونٹی سکولوں کو ہر علاقے میں شاخ قائم کرنے کی اجازت دے دی، دینیات، عربی زبان، سماجیات اور قومی تربیت کے مضامین پڑھانے کے لئے سعودی اساتذہ و استانیوں کی خدمات حاصل کرنا ہوں گی جبکہ غیر کمیونٹی اور سعودیوں کی اولاد کے لئے داخلے کا نظام بھی منظو ر کرایا گیا ہے۔ وزارت تعلیم و تربیت نے17غیر ملکی سکول سربمہر کر دیئے اور32سکولوں کو مختلف خلاف وزیوں پر انتباہ نامے جاری کئے ہیں، غیر ملکی سکولوں کی نگرانی کونسل کی مجلس عاملہ نے حال ہی میں سکولوں کے مستقبل کے لئے سکیمیں، وزیر تعلیم و تربیت شہزاد خالد بن الفیصل کو پیش کیں اور انہوں نے غیر ملکی سکولوں کے حالات اور ان کی کارکردگی کو منظم کرنے والی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا۔ غیر ملکی سکولوں کو اس امر کا پابندی کیا ہے کہ وہ اپنے یہاں دینیات، عربی زبان اور سماجیات و قومی تربیت کے مضامین پڑھائیں۔ علاوہ ازیں غیر ملکی سکولوں میں مذکورہ مضامین پڑھانے والے اساتذہ اور استادیوں کی صلاحیتوں کو جانچنے اور ان کی کارکردگی پر نظر رکھنے کے لئے نگران مرد و خواتین مختص کئے گئے ہیں۔ کمیٹی نے غیر ملکی سکولوں میں سعودی طلبا کے داخلے کے ضابطے بھی جاری کر دیئے ہیں ۔ ان سکولوں کے مالکان سعودی ہیں ان سے کہا گیا ہے کہ وہ طلبا و طالبات کے شعبے الگ الگ قائم کریں۔ اصولی منظوری کی بنیاد پر کام کرنے والے سکولوں اور لائسنس کی تجدید نہ کرانے والے سکولوں کے معاملات حل کرنے کا طریقہ کار بھی مقرر کیا گیا ہے۔ کمیونٹی کے سکولوں کو شاخیں کھولنے کی اجازت ہے بشرطیکہ ایک علاقے میں ایک سے زیادہ شاخیں نہ ہوں۔ غیر ملکی سکولوں میں مختلف تعلیمی مراحل کے لئے اجازت نامے مرحلہ بہ مرحلہ دینے کا فیصلہ بھی کر لیا گیا ہے۔ لائحہ عمل یہ بھی طے کیا گیا کہ جو سکول عربی زبان، اسلامی تمدن اور مملکت کی تاریخ و جغرافیہ کے مضامین نہیں پڑھائیں گے ان کے خلاف کارروائی ہو گی۔

مزید : عالمی منظر